چارسدہ، ماڈل کورٹس نے کارکردگی کے لحاظ سے اپوزیشن حاصل کرلی

چارسدہ، ماڈل کورٹس نے کارکردگی کے لحاظ سے اپوزیشن حاصل کرلی

  



چارسدہ(بیو رو رپورٹ) فوج داری مقدمات کو تیزی سے نمٹانے اور پہلے سے موجود مقدمات کا حجم کم کرنے کیلئے قائم کئے گئے ماڈل کورٹس میں کارکردگی کے لحاظ سے ضلع چارسدہ نے پاکستان بھر میں پہلی پوزیشن حاصل کی۔ماڈل کورٹ کے ایڈیشنل اینڈ ڈسٹرکٹ سیشن جج چارسدہ ارباب سہیل حمیدنے منشیات اور قتل مقاتلے کے سب سے زیادہ مقدمات نمٹانے پر پاکستان بھر میں پہلی پوزیش حاصل کی ہے۔ چارسدہ کے ماڈل کورٹ میں تعینات ایڈیشنل اینڈ سیشن جج ارباب سہیل حمید کو امتیازی کارکردگی پر سابق اس چیف جسٹس آف پاکستان آصف سعید کھوسہ کی جانب سے تعریفی سرٹیفیکٹ بھی دے دی گئی ہے۔ایڈیشنل اینڈ سیشن جج ارباب سہیل حمید نے اپریل سے اب تک منشیات اور قتل مقاتلے کے سب سے زیادہ کیسز نمٹانے پر پاکستان بھر میں پہلی پوزیش حاصل کر لی جبکہ مشترکہ کیسسز میں صوبہ خیبر پختون خواہ میں پہلی پوزیش حاصل کی۔ عدالتی ذرائع کے مطابق ارباب سہیل حمید نے آٹھ ماہ کی قلیل مدت میں کل 892 مقدمات نمٹائے جس میں دفعہ 302 کے 208 اور منشیات کے 684 مقدمات شامل ہیں۔ جو کہ پاکستان بھر میں سب سے زیادہ مقدمات ہیں۔ سابق چیف جسٹس اف پاکستان آصف سعید کھوسہ نے بہترین کارکردگی پر ارباب سہیل حمید کو تعریفی سرٹیفیکیت دیا ہے۔ اس حوالے سے ایڈیشنل اینڈ سیشن جج ارباب سہیل حمید کا کہنا ہے کہ میری اولین کوشش یہی ہے کہ تمام فیصلے میرٹ اور انصاف پر ہو اور عوام کو انصاف جلد از جلد مل سکے اور سائیلین کو سالوں عدالتوں کے چکر کاٹنے نہ پڑے انہوں نے کہا کہ جون کے بعد ضلع چارسدہ میں قتل اور منشیات کے کیسسز میں کافی حد تک کمی آئی ہے جس سے یہ اندازہ ہوتا ہے کہ جرائم کی شرخ میں کمی ہو رہی ہے

مزید : پشاورصفحہ آخر