وزیر اعظم کا بلڈرز اور ڈویلپرزکے مسائل حل کرنے کا فیصلہ خوش آئند‘ میاں زاہد حسین

وزیر اعظم کا بلڈرز اور ڈویلپرزکے مسائل حل کرنے کا فیصلہ خوش آئند‘ میاں زاہد ...

  



کراچی(آن لائن)پاکستان بزنس مین اینڈ انٹلیکچولز فور م وآل کراچی انڈسٹریل الائنس کے صدر،بزنس مین پینل کے سینئر وائس چیئر مین اور سابق صوبائی وزیر میاں زاہد حسین نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان کی جانب سے بلڈرز اور ڈویلپرزکے مسائل حل کرنے کے احکامات انتہائی خوش آئند ہیں کیونکہ یہ شعبہ لاکھوں افراد کو روزگار فراہم کرنے کے علاوہ چالیس صنعتوں کو رواں رکھنے میں بنیادی کردار ادا کرتا ہے۔میاں زاہد حسین نے بز نس کمیونٹی سے گفتگو میں کہا کہ گزشتہ روز وزیر اعظم عمران خان نے بلڈرز اور ڈویلپرزکے حقیقی مسائل حل کرنے کے احکامات جاری کئے ہیں جس سے اس شعبہ میں بے چینی ختم ہو جائے گی اور یہ یکسوئی سے ملکی و قوم کی ترقی میں اپنا کردار ادا کر سکیں گے جس سے روزگار اور کاروبار میں اضافہ ہو گا اور حکومت کو محاصل کی مد میں آمدنی ہو گی اس لئے اس فیصلے کی بھرپور حمایت کرتے ہیں۔انھوں نے کہا کہ یہ شعبہ سیمنٹ اور سریے کی قیمتوں میں اضافہ کے علاوہ ٹیکس معاملات کی وجہ سے مشکلات کا شکار تھا۔

 مگر اب امید ہے کہ انکے مسائل حل ہو جائیں گے۔میاں زاہد حسین نے کہا کہ حکومت کی کوششوں سے موجودہ مالی سال کے ابتدائی پانچ ماہ میں کرنٹ اکانٹ کے خسارے میں 73 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔مرکزی بینک کے مطابق جولائی سے نومبر تک کا خسارہ 1.82 ارب ڈالر ہے جبکہ گزشتہ سال انہی پانچ ماہ کا خسارہ 6.73 ارب ڈالر تھا۔خسارے میں کمی کی بنیادی وجہ درآمدی بل میں کمی ہے جبکہ برآمدات میں بھی کچھ اضافہ ہوا ہے۔میاں زاہد حسین نے کہا کہ درآمدی بل میں کمی مسائل کا حل نہیں ہے بلکہ اسکے لئے برآمدات بڑھانا ضروری ہیں جبکہ زرمبادلہ کا ذریعہ بننے والے دیگر شعبوں کو بھی بھرپور توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ اسی لئے وزیر اعظم عمران خان نے ترسیلات میں اضافہ کے لئے اقدامات شروع کر دئیے ہیں۔اس سلسلہ میں ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ کی سربراہی میں ایک کمیٹی بنائی گئی ہے جو ترسیلات میں اضافہ کی حکمت عملی وضع کرے گی۔ کمیٹی میں وزیر اعظم کے مشیر ذوالفقار بخاری، سابق وزیر خزانہ شوکت ترین، گورنر سٹیٹ بینک ڈاکٹر رضا باقر اور سیکرٹری فنانس شامل ہیں جو دیگر ممالک میں مقیم پاکستانیوں کو قانونی ذرائع سے رقم بھیجنے کے لئے ترغیبات کا ڈرافٹ تیار کریں گے جبکہ اس سلسلہ میں بینکوں کو بھی مراعات دی جائیں گی تاکہ وہ بھی اس مقصد کے حصول کے لئے ہر ممکن تعاون کریں۔#/s#

مزید : کامرس


loading...