وزیر اعظم کراچی آمد پرشہر کیلئے واضح لائحہ عمل دیں، حافظ نعیم الرحمن

وزیر اعظم کراچی آمد پرشہر کیلئے واضح لائحہ عمل دیں، حافظ نعیم الرحمن

  



کراچی (اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خانجمعہ 27دسمبر کو ایک بار پھر کراچی کے دورے پر آرہے ہیں، اس سے قبل بھی کئی مرتبہ کراچی کا دورہ کر چکے ہیں مگر افسوس کہ اب تک ڈھائی کروڑ آبادی والے شہر کے مسائل کے حل اور مشکلات و پریشانیوں کے خاتمے کے لیے کوئی واضح لائحہ عمل اور ٹھوس اقدامات سامنے نہیں آسکے،وفاق کی جانب سے کراچی کے لیے 162ارب روپے کے پیکیج کا اعلان تو کیا گیا مگر تاحال وہ رقم بھی ابھی تک کراچی کو نہ مل سکی اور نہ یہ واضح ہو سکا ہے کہ یہ 162ارب روپے کراچی کوکب ملیں گے؟ یہ رقم کن منصوبوں اور پروجیکٹ پر خرچ ہو گی اور کس کے ذریعے سے خرچ ہو گی؟ ضروری ہے کہ وزیر اعظم عمران خان اپنے حالیہ دورے میں کراچی کی تعمیر و ترقی، عوام کی فلاح و بہبود اور شہر کی حالت ِ زار کی بہتری کے لیے واضح لائحہ عمل اور عملی اقدامات کا اعلان کریں اور 162ارب روپے کی رقم کی فراہمی کو بھی فی الفور یقینی بنائیں۔ کیوں کہ وہ خود بھی کراچی میں ایک نشست سے منتخب ہو چکے ہیں اور اہلیانِ کراچی ان کی توجہ اور عملی اقدامات کے منتظر ہیں۔حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ کراچی کے عوام آج جن سنگین مسائل اور مشکلات کا شکار ہیں اس کی ذمہ دارموجودہ اور سابقہ حکومتیں اور حکمران پارٹیاں ہیں۔ پی ٹی آئی، ایم کیو ایم اور پیپلز پارٹی نے کراچی سے ووٹ لیے ہیں، تینوں حکمران پارٹیوں اور وفاقی، صوبائی اور بلدیاتی حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ ایک دوسرے پر الزامات لگانے، دوسروں پر ذمہ داری عائد کرنے اور پوائنٹ اسکورنگ کرنے کے بجائے کراچی کے عوام کے دیرینہ اور سنگین مسائل حل کریں۔ نمائشی اقدامات اور زبانی جمع خرچ کا سلسلہ اب بند ہو نا چاہیئے اور کام نظر آنا چاہیئے۔ شہریوں کو حقیقی معنوں میں ریلیف ملنا چاہیئے۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ کراچی کے شہری بجلی، پانی، صفائی ستھرائی، سیوریج کے ناقص انتظامات، سڑکوں کی خستہ حالی اور ٹرانسپورٹ کے مؤثر نظام کے نہ ہونے کی وجہ سے مسلسل اذیت اور کرب میں مبتلا ہیں اور شہریوں کا کوئی پُرسانِ حال نہیں۔ ایسا محسوس ہو تا ہے کہ کراچی میں کسی بھی سطح پر حکومت نام کی کوئی چیز موجود نہیں جبکہ دوسری طرف خود حکمران پارٹیاں کراچی کے مسائل پر سیاست کر رہی ہیں اور مسائل حل کرنے کو کوئی تیار نہیں۔

مزید : صفحہ اول


loading...