” یہ سزا مجھے قبول ہے“گرفتاری کے بعد احسن اقبال کا واضح اعلان

” یہ سزا مجھے قبول ہے“گرفتاری کے بعد احسن اقبال کا واضح اعلان
” یہ سزا مجھے قبول ہے“گرفتاری کے بعد احسن اقبال کا واضح اعلان

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)مسلم لیگ ن کے رہنما احسن اقبال نے کہاہے کہ اگرمجھے جنرل پرویز مشرف کی سزا کی حمایت کرنے پر گرفتار کیاگیا ہے تو مجھے سزاقبول ہے ، اگر مجھے نارووال کی عوام سے کیا گیا وعدہ پورا کرنے پر گرفتار کیاگیا ہے تو بھی مجھے یہ سزا قبول ہے ،انہوںنے کہا کہ اگر مجھے اس لئے گرفتار کیاگیا ہے کہ میں نوازشریف اور مسلم لیگ ن کیساتھ وفادار ہوں توبھی مجھے یہ سزا قبول ہے لیکن اگر مجھے عمران نیازی کی ناکام حکومت کیخلاف بولنے سے چپ کرانے کیلئے گرفتار کیاگیاہے تو پھر مجھے یہ سزا قبو ل نہیں ہے ہم انشااللہ ہم کردار ادا کرتے رہیں گے ان اوچھے ہتھکنڈوں سے کبھی خاموش نہیں ہوسکتے ۔

نارووال سپورٹس کمپلیکس سٹی کیس میں گرفتار لیگی رہنما نے احتساب عدالت آمد پر میڈیا سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ نارروال سپورٹس کمپلیکس ڈھائی ارب روپے کامنصوبہ تھا،ڈھائی ارب روپے کے منصوبے میں 6ارب روپے کی کرپشن کیسے ہوسکتی ہے؟انہوں نے کہاکہ یہ وہ منصوبہ ہے جو پاکستان میں کھیلوں کی نوعیت کا پہلا منصوبہ ہے جس کی تکمیل کامیں نے 2013 میں نارروال کے عوام سے وعدہ کیاتھا،2018 میں نارروال کے عوام نے مجھے بھاری مینڈیٹ سے جیتوایا،نارووال کے عوام کیلئے ایسی دس سزائیں قربان ہیں ۔ویڈیو دیکھئے

انہوں نے کہا کہ ہمارے نارووال ضلع میں 16 ارب کا ایک منصوبہ بناتھامجھے بتائیں اس کا پی سی ون بناتھااس کی سی پی ڈبلیوہوئی تھی کیا اس کی ایکنک ہوئی تھی اس کا پیپرا نے کوئی سنگل سورس کرنے کوکہاتھا،انہوں نے کہا کہ چونکہ اس منصوبے کے پیچھے چھڑی تھی اس لئے اس کو کوئی آنکھ نہیں اٹھا سکتا اور ہم نے ووٹ کی طاقت سے اس منصوبے کو بنایاتھا اس لئے ہم چور اور مجرم ہیں ۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد