وہ مقدمات جو سابق ڈی جی ایف آئی اے نے بنانے سے انکار کردیا لیکن ان کو عہدے سے الگ کرنے کیساتھ تینوں مقدمات بنا دیے گئے مگر کون کونسے ؟ صحافی نے دعویٰ کردیا

وہ مقدمات جو سابق ڈی جی ایف آئی اے نے بنانے سے انکار کردیا لیکن ان کو عہدے سے ...
وہ مقدمات جو سابق ڈی جی ایف آئی اے نے بنانے سے انکار کردیا لیکن ان کو عہدے سے الگ کرنے کیساتھ تینوں مقدمات بنا دیے گئے مگر کون کونسے ؟ صحافی نے دعویٰ کردیا

  



کراچی(ویب ڈیسک)رہنما مسلم لیگ ن احسن اقبال کو نیب نے گرفتار کر لیا اس حوالے سے اینکر پرسن شاہزیب خانزادہ سابقہ ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن کو خواجہ آصف، احسن اقبال، میاں جاوید لطیف کے اوپر کیس بنانے کا کہا گیا تو وہ نہ مانے، ڈی جی ایف آئی اے جیسے ہی ریٹائر ہوئے وہ تینوں کیسز نیب کی طرف سے ایک ایک کر کے ہوگئے ہیں تو یہ نیب پر ایک بہت بڑا سوال اٹھ رہا ہے۔

روزنامہ جنگ کے مطابق تحریک انصاف کے رہنما وفاقی وزیر مراد سعید نے کہا کہ یہی لوگ کہتے تھے کہ لندن تو کیا پاکستان میں بھی ہماری کوئی جائیداد نہیں ہے آج انہی جائیدادوں میں بیٹھے ہوئے تو کیا یہ سب کچھ ثابت نہیں ہوا احسن اقبال سے ایک سال سے ہم سوال کر رہے ہیں اور یہ عدالت سے بھاگ چکے ہیں نارووال پراجیکٹ کے علاوہ کوئی بھی پراجیکٹ کھولیں گے ان کا یہی اندازِ گفتگو ہو گا۔تجزیہ کار مظہر عباس نے کہا کہ نیب کیسز اچھے نہیں رہے لوگوں کو گرفتار کر لیا جاتا ہے پھر کیسز بلڈ اپ کیے جاتے ہیں جو کیسز شروع میں بلڈ اپ ہوئے جو تحریک انصاف کے وزرا کے حوالے سے بھی تھے لیکن یکایک نیب نے طے کیا کہ پہلے پرانے کیسز کو ڈیل کریں گے یہ تاثر اگر بڑھتا رہے گا تو نیب پر سوالیہ نشانہ بڑھتے جائیں گے۔

تجزیہ کار سہیل وڑائچ نے کہا کہ ہم کافی وقت سے دیکھ رہے ہیں کہ نیب کے جو بھی الزامات ہوتے ہیں وہ عدالتوں میں چارجز فریم ہی نہیں ہوتے ڈاکٹر عاصم پر ساڑھے چار سو ارب روپے کے الزامات لگے بعد میں ایک دھیلہ میں بھی وصول نہیں ہوا۔تجزیہ کار حامد میر نے کہا کہ مجھے اب یہ نظر آرہا ہے کہ پارلیمنٹ میں جو قانون سازی ہونی ہے اس کے راستے میں کافی مشکلات کھڑی ہوجائیں گی جان بوجھ کر اپوزیشن کو اشتعال دلایا گیا ہے کہ وہ تعاون نہ کرے حکومت نے تلخیاں کم کرنے کی کوشش نہیں کی۔تجزیہ کار سلیم صافی نے کہا کہ جو لوگ خاموش ہیں یا مصلحت کی سیاست کر رہے ہیں ان کے بارے میں نیب بھی خاموش ہوتا ہے اور دیگر ادارے بھی خاموش ہوتے ہیں۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی


loading...