پاکستان کا وہ ضلع جہاں ایک سال کے دوران 1300 گھرانے ٹوٹ گئے، انتہائی افسوسناک خبرآگئی

پاکستان کا وہ ضلع جہاں ایک سال کے دوران 1300 گھرانے ٹوٹ گئے، انتہائی افسوسناک ...
پاکستان کا وہ ضلع جہاں ایک سال کے دوران 1300 گھرانے ٹوٹ گئے، انتہائی افسوسناک خبرآگئی

  



سرگودھا (ویب ڈیسک) گزشتہ سالوں کی نسبت رواں سال خواتین پر تشدد کے واقعات میں جہاں اضافہ ہوا وہیں سرگودھا کی عدالتوں کے ذریعے نکاح کرنے کا رجحان بھی بڑھا ہے تاہم 1300 سے زائد خواتین نے ایک سال کے دوران طلاقیں لیں۔معاشرہ میں جہاں عدم برداشت کے باعث خواتین پر تشدد اور غیرت کے نام پر قتل کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے، وہیں سرگودھا کی عدالتوں میں نہ صرف نکاح کرنے کا رجحان بڑھا ہے بلکہ معمولی جھگڑوں کی بنیاد پر طلاقوں کی شرح میں بھی خاطر خواہ اضافہ بھی ہوا ہے۔ضلع سرگودھا کی فیملی عدالتوں میں ایک سال کے دوران طلاق سے متعلقہ 2500 سے زائد کیس دائر ہوئے جن میں سے 1300 سے زائد خواتین نے طلاقیں لیں۔

ماہرین قانون شادی ٹوٹنے کی وجوہات بتاتے ہوئے کہتے ہیں کہ عدم برداشت، ازدواجی زندگی اسلامی تعلیمات کے مطابق نہ ہونا، خواتین پر تشدد اور غیرت کے نام پر قتل، عدالتوں کے ذریعے نکاح اور پھر طلاق کے معاملات اس کی بڑی وجہ ہیں۔ماہرین قانون کا کہنا ہے کہ فیملی عدالتوں میں طلاق کے مقدمات کے جلد فیصلے کرنے کی بجائے فریقین کو سوچنے اور سمجھنے کا زیادہ سے زیادہ وقت دینا چاہیے۔

مزید : علاقائی /پنجاب /سرگودھا


loading...