سرکار ی افسران عوام کوغلام سمجھتے ہیں، مائنڈ سیٹ آہستہ آہستہ تبدیل ہوگا ،وزیراعظم کااوور سیز پاکستانیوں کے اہل خانہ کو ہیلتھ کارڈ دینے کااعلان

سرکار ی افسران عوام کوغلام سمجھتے ہیں، مائنڈ سیٹ آہستہ آہستہ تبدیل ہوگا ...
سرکار ی افسران عوام کوغلام سمجھتے ہیں، مائنڈ سیٹ آہستہ آہستہ تبدیل ہوگا ،وزیراعظم کااوور سیز پاکستانیوں کے اہل خانہ کو ہیلتھ کارڈ دینے کااعلان

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر اعظم عمران خان نے کہاہے کہ سرکاری افسران عوام کو غلام سمجھتے ہیں، آئی جی پنجاب کولوگوں کیلئے آسانیاں پیدا کرنے کی ہدایت کی ہے ، پی آئی اے اوردیگر اداروں کوبہتر کررہے ہیں، جمہوری حکومت عوام کی ہوتی ہے ، مائنڈ سیٹ آہستہ آہستہ تبدیل ہوگا ،بیرون ملک کام کرنیوالوں کوسہولیات اوران کے اہل خانہ کو ہیلتھ کارڈدیںگے ۔

اسلام آباد میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ بیرون ملک محنت کرنے والے لوگ اللہ کے بہت قریب ہوتے ہیں، پاکستان بیرون ملک محنت کرکے پیسے بھیجنے والے کے سر پر چل رہاہے ۔ یہ لوگ باہر محنت مزدوری کرتے ہیں اورایک ایک کمرے میں چھ چھ رہتے ہیں ،دو دو نوکریاں کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں ان مزدوروں کی قدر کرنی چاہئے تھی لیکن ہم قدر نہیں کرتے تھے مگرجب سے ہماری حکومت آئی ہے تومیں نے تمام سفارتخانوں کو ہدایت کی ہے کہ ان کاخاص خیال رکھا جائے کیونکہ یہ مجبوری کی حالت میں بیرون ملک نوکری کرنے جاتے ہیں ، ہم نے یہاں ایسے حالات ہی پیدا نہیں کئے کہ وہ پاکستان میں نوکری کرسکیں۔

وزیر اعظم کا کہناتھا کہ بیرون ملک نوکریاں کرنے والوں کے گھروالوں کوہیلتھ کارڈ دیں گے اور ان کودیگر سہولیات بھی دیں گے ، پاکستان پوسٹ کے پانچ سو پوسٹ آفسز ان کے گھر وں میں پیسہ بھیجنے کیلئے بنائے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کا کام اپنے لوگوں کی زندگی آسان کرنا ہوتاہے ، بدقسمتی سے انگریزوں کے آنے سے پہلے یہاں بادشاہت تھی اور بادشاہت میں لوگ بادشاہ کی خدمت کرنے کیلئے ہوتے ہیں لیکن جب انگریزوں کی حکومت آئی تو وہ بھی اپنی خدمت کروانے آئی اور پاکستان بننے کے بعد بھی یہ ذہن تبدیل نہیں ہوا ، کوئی افسر عوام کے کام کرتا ہے تو سمجھتاہے کہ اس نے بڑا احسان کیاہے ، ہم نے اس سوچ کوتبدیل کرنا ہے، سرکاری افسران لوگوں کوغلام سمجھتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہم سرکاری ہسپتالوں اورسکولوں میں ایسا علاج اورتعلیم دیں گے جو پرائیویٹ اداروں میں میسر ہے۔ ہم سوچ بدلنے کی کوشش کررہے ہیں جب ہم حکومت کرنے آتے ہیں تو اپنی خدمت کروانے نہیں آتے بلکہ عوام کی خدمت کرنے آتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ میں نے نئے آئی جی پنجاب سے کہاہے کہ کوئی ایسا کام کریں کے عوام تھانے میں جا کرمحسوس کریںکہ یہ تھانہ ان کے تحفظ کیلئے ہے، پنجاب کے لوگوں کیلئے تھانوں میں آسانیاں پیدا کریں ۔ انہوں نے کہا کہ مدینہ کی ریاست ایک دن میں نہیں بن گئی تھی بلکہ نبی کریمﷺ نے آہستہ آہستہ سوچ بدلی اور وہ قوم جس کو کوئی پوچھتا نہیں تھا ، وہ دنیا کی بہترین قوم بن گئی ۔انہوں نے کہا کہ مجھے مراد سعیدنے بتایا ہے کہ پاکستان پوسٹ پہلے نقصان کررہا تھا ،اب نقصان سے نکل آیاہے اوراگلے سال تک نفع کماناشروع کردےگا ۔انہوں نے کہا کہ چائنہ دنیا میں ترقی کر رہا تو اس کی وجہ وہاں میرٹ کازبردست نظام ہوناہے ،وہاں میرٹ کے تحت لوگوں کواوپرلے کرآتے ہیں توان کامقابلہ کبھی بھی وہ لوگ نہیں کرسکتے جہاں میرٹ کانظام نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہم میرٹ کا نظام لانے کی کوشش کررہے ہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ ہرادارے میں کوشش ہورہی ہے کہ میرٹ لیکر آئیں، ہماراپہلا سال مشکل سال تھا ،معیشت کودرست کرنا تھا ، ہم نے پہلے معیشت کومستحکم کرنےکوششکی,  2020میں ساری کوشش ہوگی کہ عوام کیلئے نوکریاں پیدا کی جائیں اوردوسری طرف غربت ختم کرنے کے پروگرام کو پوری طرح چلائیں ۔

مزید : اہم خبریں /قومی