کوئٹہ، بارشوں، سیلابی ریلوں سے ہونیوالے نقصانات کا سروے مکمل 

کوئٹہ، بارشوں، سیلابی ریلوں سے ہونیوالے نقصانات کا سروے مکمل 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کوئٹہ (این این آئی)بلوچستان حکومت کی جانب سے مون سون کے دوران بارشوں اور سیلابی ریلو ں سے ہونے والے نقصانات کا جائزہ لینے کیلئے کروایا جانے والا سروے مکمل ہوگیا صوبے میں مجموعی طور پر 321019 مکانات کو نقصان پہنچا جبکہ پانچ لاکھ90 ہزار 439ایکٹر پر کھڑی فصلات تباہ ہوئیں، 2لاکھ 92ہزار 526 مویشی سیلابی ریلوں کی نذر ہوئے تفصیلات کے مطابق بلوچستان میں رواں سال یکم جون سے 25اگست تک ہونے والی مون سون بارشوں اور سیلابی ریلوں کے باعث  بڑے پیمانے پر نقصانات ہوئے ان نقصانات کے ازالے کیلئے بلوچستان حکومت نے محکمہ ریونیو کے زیر اہتمام صوبے کے 32 اضلاع میں جوائنٹ سروے کرایا جس کی رپورٹ مرتب کرلی گئی رپورٹ کے مطابق تین ماہ کے مون سون بارشوں اور سیلابی ریلوں سے 336افراد جاں بحق جبکہ 187 زخمی ہوئے،صوبے میں مجموعی طور پر 321019 مکانات کو نقصان پہنچا250137 مکانات مکمل طور پر گرے جبکہ 96166کو جزوی نقصان پہنچا سب سے زیادہ94578 مکانات ضلع نصیر آباد میں نقصان پہنچا جبکہ سب سے  کم نقصانات ضلع زیارت میں ہوا وہاں 223مکانات گرے  سروے رپورٹ کے مطابق صوبے میں پانچ لاکھ90 ہزار 439ایکٹر پر کھڑی فصلات تباہ ہوئیں سب سے زراعت کو نقصان ضلع جھل مگسی  میں ہواجہاں ایک لاکھ 73ہزار 908ایکٹر پر فصلات تباہ ہوئیں رپورٹ کے مطابق بلوچستان میں 2لاکھ 92ہزار 526 مویشی سیلابی ریلوں کی نذر ہوئے جن میں نوے ہزار سے زائد جھل مگسی اور 85ہزار نصیر آباد میں مارے گئے محکمہ ریونیو کی جانب سے رپورٹ جلد صوبائی حکومت کو پیش کی جائے گی جس کے بعد متاثرین کی بحالی کاکام شروع کیا جائیگا۔
سروے مکمل 

مزید :

صفحہ آخر -