ملتان،اکتالیس گرجا گھروں کی سکیورٹی فول پروف بنانیکاحکم

ملتان،اکتالیس گرجا گھروں کی سکیورٹی فول پروف بنانیکاحکم

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


ملتان(خصو صی  رپورٹر)  سی پی او ملتان شاکر حسین داوڑ کی ہدایت پر ملتان پولیس کی جانب سے کرسمس کے حوالے سے سیکیورٹی پلان جاری کردیا گیا ملتان پولیس کی جانب سے کرسمس کے موقع پر فول پروف سیکورٹی پلان جاری کر دیا گیا جس میں تمام پروگرامز(بقیہ نمبر28صفحہ6پر)
 پر بھاری نفری تعینات کی جائے گی،ضلع بھر میں کل 41 چرچ پر عبادات منعقد ہوں گی جن میں سے 03 چرچ حساس نوعیت کے ہوں گے۔اس موقع پر 01 ہزار سے زائد پولیس افسران و جوان ڈیوٹی سر انجام دیں گے۔اس کے علاوہ ڈولفن فورس، ایلیٹ فورس اور محافظ اسکواڈ کی ٹیمیں  ان علاقوں میں گشت کریں گی۔خفیہ نگرانی کے لئے سفیدکپڑوں میں بھی پولیس اہلکاران ڈیوٹی سر انجام دیں گے۔ضلع بھر کے داخلی اور خارجی راستوں اور گرجا گھروں کے انٹری پوائنٹس پر سخت چیکنگ کی جائے گی۔بائیو میٹرک کے ذریعے شہریوں کے کوائف کی تصدیق کی جائے گی۔چرچ میں عبادت کے شرکا کو تلاشی کے بعد چرچ میں داخل ہونے دیا جائے گا سی پی او ملتان شاکر حسین داوڑ کا نئے سال کی آمد کے حوالے ملتان کے شہریوں خصوصا نوجوانوں اور والدین کے لیے خصوصی پیغام نئے سال کی خوشی میں ون ویلنگ، ہوائی فائرنگ، ہلڑ بازی، آتش بازی اور  دیگر اس طرح کی سرگرمیوں سے اجتناب کریں والدین سے بھی اپیل ہے کہ اپنے بچوں پر کڑی نظر رکھیں اور اس حوالے سے اپنے بچوں کو نصیحت کریں عوام سے اپیل ہے کہ نئے سال کے موقع پر امن و امان کے قیام کو یقینی بنانے کے لیے پولیس کے ساتھ تعاون کریں۔ون ویلنگ، ہوائی فائرنگ، آتش بازی، ہلڑ بازی اور قانون کو ہاتھ میں لینے والوں کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے گاشہری کسی منفی سرگرمی کا حصہ نہ بنیں اور قانون شکن عناصر کے خلاف ایمرجنسی ہیلپ لائن 15 یا متعلقہ تھانے کو اطلاع دے کر ذمہ دار شہری ہونے کا ثبوت دیں سی پی او ملتان شاکر حسین داوڑ نے ملتان پولیس میں تبادلوں کے لیے نئی پالیسی جاری کر دی ہے، ملازمین تبادلے کے لیے خود درخواست دے سکیں گے جبکہ سفارش کروانے والوں کے خلاف محکمانہ کاروائی عمل میں لائی جائے گی سی پی او کی جانب سے جاری مراسلے میں کہا گیا ہے کہ آئندہ تبادلے کے خواہشمند درخواست او ایس آئی برانچ میں متعلقہ افسر سے فارورڈ کروا کر جمع کروائیں گے اور تبادلے کے لیے تین آپریشنز بھی دیں گے، نئی پالیسی کے مطابق ایس ایچ او اور انچارج انویسٹیگیشن اپنے ڈویژن، سب انسپکٹرز اور اے ایس آئیز اپنے سرکلز جبکہ ہیڈ کانسٹیبلز اور کانسٹیبلز اپنے رہائشی تھانوں میں تعینات نہیں کیے جائیں گے، تبادلے کے لیے 6 ماہ تعیناتی ضروری ہے، شکایت کی صورت میں تبدیل ہونے والے تین سال تک اس جگہ پر تعینات نہیں ہو سکیں گے، تھانیدار 48 گھنٹوں اور کانسٹیبلز و ہیڈ کانسٹیبلز فوری چارج چھوڑنے کے پابند ہوں گے تاہم اگر سینئر افسر کی طرف سے کوئی شکایت موصول ہوتی ہے تو فوری تبدیلی عمل میں لائی جائے گی