پاکستان میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے میں بہت زیادہ استعداد، فائدہ اٹھانے کی ضرورت: شہباز شریف

پاکستان میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے میں بہت زیادہ استعداد، فائدہ ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

        اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز یجنسیاں) وزیر اعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ پاکستان کے پاس انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے میں بہت زیادہ استعداد ہے جس کا بھرپور فائدہ اٹھانے کی ضرورت ہے، جس قدر ٹیلنٹ اور ہنر پاکستان میں آئی ٹی کے حوالے سے موجودہے اس کے مقابلے پاکستان سے آئی ٹی برآمدات کافی کم ہیں جن کو بڑھانے کے لئے ترجیحی بنیادوں پر کام کیا جائے،آئی ٹی سیکٹر کی برآمدات بڑھانے کیلئے ترجیحی بنیادوں پر کام کرنے کی ضرورت ہے،متعلقہ وزراء اور افسران آئی ٹی برآمد کنندگان سے ایک تفصیلی ملاقات کریں اور ان کے تمام مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کے لیے اقدامات کریں۔وزیراعظم محمد شہباز شریف کی زیر صدارت انفارمیشن ٹیکنالوجی خصوصاً آئی ٹی کے شعبے میں برآمدات کے فروغ کے حوالے سے ایک اہم اجلاس ہوا جس میں گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعظم شہباز شریف نے کہاکہ پاکستان کے پاس انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے میں بہت زیادہ استعداد ہے جس کا بھرپور فائدہ اٹھانے کی ضرورت ہے۔ وزیر اعظم نے کہاکہ جس قدر ٹیلنٹ اور ہنر پاکستان میں آئی ٹی کے حوالے سے موجودہے اس کے مقابلے پاکستان سے آئی ٹی برآمدات کافی کم ہیں جن کو بڑھانے کے لئے ترجیحی بنیادوں پر کام کیا جائے۔ وزیراعظم نے کہاکہ متعلقہ وزراء اور افسران آئی ٹی برآمد کنندگان سے ایک تفصیلی ملاقات کریں اور ان کے تمام مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کیلئے اقدامات کریں۔ وزیر اعظم نے کہاکہ یونیورسٹیز, اکادمیہ اور آئی ٹی انڈسٹری کے درمیان  رابطے بہتر بنائے جائیں۔اجلاس کے شرکاء سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان کے پاس انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے میں بہت زیادہ استعداد ہے جس کا بھرپور فائدہ اٹھانے کی ضرورت ہے. انہوں نے کہا کہ پاکستانی اینٹرپرنیورزنے آئی ٹی سیکٹر کے فروغ اور ترقی میں انتہائی اہم کردار ادا کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی آئی ٹی سیکٹرز کی برآمدات پاکستان میں آئی ٹی سیکٹر کے ٹیلنٹ اور استعداد کے مقابلے کافی کم ہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ آئی ٹی سیکٹر کی برآمدات بڑھانے کیلئے ترجیحی بنیادوں پر کام کرنے کی ضرورت ہے۔وزیراعظم نے کہا کہ ایسے ایکسپورٹرز جنہوں نے آئی ٹی ایکسپورٹس میں خاطر خواہ اضافے کے لیے کردار ادا کیا انھیں حکومتی سطح پر سراہا جائیگا۔اجلاس کو  بتایا گیا کہ گزشتہ سال  پاکستان کی آئی ٹی ایکسپورٹ 2.6  بلین امریکی  ڈالرز رہیں اور بھرپور کوشش کی جا رہی ہے کہ وزیراعظم کے ویژن کے مطابق ان برآمدات کو رواں سال 5 بلین امریکی ڈالرز تک بڑھایا جائے۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ سب سے زیادہ آئی ٹی برآمدات ریاست ہائے متحدہ امریکا کو جا رہی ہیں جو کہ کل آئی ٹی برآمدات کا 57  فیصد ہے،بریفنگ میں بتایا گیا کہ پاکستان کے پاس دنیا میں دوسری بڑی فری لانس ورک فورس موجود ہے جس کی استعداد میں اضافے کیلئے پاکستان سافٹ ویئر ایکسپورٹ اقدامات کر رہا ہے۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ آئی ٹی انڈسٹری میں نئے لوگوں کی شمولیت کے لیے یونیورسٹیز میں آئی ٹی کے حوالے سے دو سالہ ایسو سی ایٹ ڈگری پروگرامز شروع کرنے پر غور کیا جا رہا ہے۔اجلاس کو بتایا گیا کہ آرٹیفیشل انٹیلی جنس، سائبر ٹیکنالوجی, چین  اور کلاؤڈ ٹیکنالوجی بھی حکومتی ترجیحات کا حصہ ہیں،پاکستان میں آئی ٹی کے شعبے میں بیرونی سرمایہ کاری کے فروغ کیلئے ٹیک ڈیسٹینیشن پاکستان کے برانڈ کو پوری دنیا میں متعارف کروایا جا رہا ہے۔اجلاس کو بتایا گیا کہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے آئی ٹی ایکسپورٹرز کی سہولت کیلئے کراچی، لاہور اور اسلام آباد میں ہیلپ ڈیسکس قائم کئے ہیں جو کمشنر آئی آر لیول کے افسر کی سربراہی میں کام کر رہے ہیں، مزید براں آئی ٹی ایکسپورٹرز کو سہولیات کی فراہمی کیلئے تمام تر اقدامات کئے جا رہے ہیں۔وزیراعظم نے ہدایت کی کہ متعلقہ وزراء اور افسران آئی ٹی برآمد کنندگان سے ایک تفصیلی ملاقات کریں اور ان کے تمام مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کے لیے اقدامات کریں۔وزیراعظم شہباز شریف نے کہاہے کہ بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو بین الاقوامی معیار کی رہائشی سہولتیں فراہم کرنا ہماری حکومت کی اولین ترجیح ہے،بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کے لیے وفاقی دارالحکومت  میں جدید سہولیات سے آراستہ ہاؤسنگ یونٹس تعمیر کیے جائیں،اس ضمن میں عالمی شہرت کی حامل تعمیراتی کمپنیوں کی خدمات حاصل کی جائیں۔ جمعہ کو وزیر اعظم محمد شہباز شریف نے بیرون ملک مقیمْ پاکستانیوں کے لیے عالمی معیار کی حامل رہائشی سہولتیں تعمیر کرنے کے حوالے سے اعلی سطحی اجلاس کی صدارت کی،کیپٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے حکام نے اس حوالے سے وزیر اعظم کو تفصیلی بریفنگ دی۔وزیر اعظم نے کہا کہ ان ترقیاتی منصوبوں کو جلد از جلدمکمل کیا جائے۔ وزیر اعظم نے کہاکہ بیرون ملک مقیم پاکستانی ہمارا انتہائی قابل قدر اثاثہ ہیں۔ ان کی فلاح و بہبود اور حقوق کا تحفظ ہماری حکومت کی اولین ترجیح ہے۔وزیر اعظم محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ پاکستان اور قازقستان کے درمیان دوستی روز بروز گہری ہو رہی ہے اور بین الحکومتی مشترکہ کمیشن کے 11ویں اجلاس کا کامیاب انعقاد بڑھتے ہوئے تعلقات کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے قازقستان کے نائب وزیر اعظم سیرک ڑومنگرین کی قیادت میں ملنے والے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا جس نے جمعہ کو یہاں ان سے ملاقات کی۔ قازقستان کا وفد نائب وزیراعظم کی قیادت میں بین الحکومتی مشترکہ کمیشن کے 11ویں اجلاس میں شرکت کے لئے پاکستان کے سرکاری دورے پر ہے۔ وزیراعظم نے قازقستان کے وفد کا خیرمقدم کرتے ہوئے اس بات کو سراہا کہ ہوا بازی، سرمایہ کاری اور بینکنگ تعاون کی تین مفاہمتی یادداشتوں پر دستخط سے دونوں ممالک کے درمیان نہ صرف تجارتی اور اقتصادی تعلقات میں اضافہ ہوگا بلکہ عوام کے درمیان رابطوں کو بھی فروغ ملے گا۔ وزیراعظم نے آئی جے سی کے 11ویں اجلاس کے دوران طے پانے والے فیصلوں کو سراہا اور مشترکہ بزنس کونسل کے ہمہ وقت انعقاد پر اطمینان کا اظہار کیا جس سے دونوں ممالک کے تاجروں کو ایک دوسرے کے قریب آنے کا موقع ملا۔ قازقستان کے نائب وزیر اعظم نے وفد کے پرتپاک استقبال پر وزیر اعظم کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان روابط آنے والے دنوں میں فروغ پاتے رہیں گے۔ وزیراعظم نے اس بات کا اعادہ کیا کہ پاکستان اور قازقستان کے درمیان دوستی روز بروز گہری ہو رہی ہے اور آئی جے سی کا کامیاب انعقاد بڑھتے ہوئے تعلقات کا منہ بولتا ثبوت ہے۔
وزیر اعظم

مزید :

صفحہ اول -