باپ کی خودکشی، ماں چھوڑ کر چلی گئی، کینسر کی مریض کم عمر لڑکی نے ایسی کہانی سنادی کہ آپ بھی ہمت کی داد دیں گے

باپ کی خودکشی، ماں چھوڑ کر چلی گئی، کینسر کی مریض کم عمر لڑکی نے ایسی کہانی ...
باپ کی خودکشی، ماں چھوڑ کر چلی گئی، کینسر کی مریض کم عمر لڑکی نے ایسی کہانی سنادی کہ آپ بھی ہمت کی داد دیں گے
سورس: Twitter/@thejulieahrens

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک)زندگی کے مصائب اور اس پر کینسر جیسی موذی بیماری، کوئی بھی شخص جینے کی امید کھو بیٹھے تاہم ایک برطانوی لڑکی نے انتہائی کم عمری میں ان مصائب کا سامنا کرنے کی ایسی کہانی بیان کی ہے کہ بڑے بڑے لو گ ایسی تکالیف کی تاب نہ لا سکیں۔ انڈیا ٹائمز کے مطابق جولی ایرن نامی اس 19سالہ لڑکی کی عمر 13سال تھی جب اس کے باپ نے خودکشی کر لی اور ماں بھی چھوڑ گئی۔
اس کے اگلے سال اسے کینسر جیسے موذی مرض نے آ لیا اور سالہا سال اس سے نبردآزما رہی اور گزشتہ سال اس کے سب سے قریبی دوست کی موت ہو گئی۔ اس کے باوجود گزشتہ دنوں اپنی 19ویں سالگرہ پر جولی نے اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ کے ذریعے بتایا ہے کہ وہ ان کڑی مصیبتوں سے گزرنے کے بعد پہلے سے زیادہ خوش ہے۔ اس کے نزدیک ایسے مصائب لوگوں کے لیے امتحان ہوتے ہیں، جن سے عقلمندی اور ثابت قدمی سے نمٹا جا سکتا ہے۔
جولی ایرن نے پانچ ایسے طریقے بتائے ہیں جن پر عمل کرکے لوگ اس طرح کی تکالیف میں ثابت قدم رہ سکتے ہیں۔ جولی اپنی ٹویٹس کے ایک تھریڈ میں لکھتی ہے کہ آپ زندگی میں کیا بننا چاہتے ہیں، یہ بات کوئی اور نہیں بلکہ آپ خود اپنے آپ کو بتاتے ہیں۔ چنانچہ آپ مستقبل میں کیا ہوں گے، اس کا انحصار کلی طور پر آپ پر ہے۔


جولی لکھتی ہے کہ جب ہم دوسروں جیسا بننے کی کوشش کرتے ہیں یا دوسروں کو اپنے لیے مثال بناتے ہیں تو ہمارے اندر احساس محرومی اور احساس کمتری جنم لیتا ہے۔ ہم اپنے آپ جیسا ہی بننا چاہیے۔ جولی نے تیسرا طریقہ بتاتے ہوئے لکھا کہ دنیا میں کوئی عالمگیر سچائی نہیں ہے، ہماری سچائی صرف ہم خود ہوتے ہیں۔
جولی لکھتی ہے کہ آپ کے ساتھ پیش آنے والے واقعات آپ کو تبدیل نہیں کرتے، بلکہ آپ ان واقعات پر کس طرح کا ردعمل دیتے ہیں، یہ رویہ آپ کو تبدیل کرتا ہے۔ آخری طریقہ بتاتے ہوئے جولی نے لکھا کہ مصائب میں ہماری قوت ارادی سب سے اہم کردار ادا کرتی ہے۔ ہر شخص کے پاس تقدیر کو بدل ڈالنے کی طاقت ہوتی ہے۔ اگر آپ کے پاس اپنی خواہشات کی تکمیل کے لیے جنگ لڑنے کا حوصلہ ہے تو آپ یقینا اپنی تقدیر بدل سکتے ہیں۔پھر کوئی بھی دکھ اور مصیبت آپ کو مایوس نہیں کر سکتی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -