”حقوق کراچی تحریک: 14مارچ کو گورنر ہاؤس تک ریلی نکالی جائیگی 

  ”حقوق کراچی تحریک: 14مارچ کو گورنر ہاؤس تک ریلی نکالی جائیگی 

  

 کراچی (اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ جماعت اسلامی کی حقوق کراچی تحریک جاری ہے، شہریوں کو جائز اور قانونی حقوق دلانے کے لیے جدو جہد جاری رہے گی،”حقوق کراچی تحریک“کے مطالبات کی منظوری کے لیے اتوار 14مارچ کو قائد آباد سے گورنر ہاؤس تک ریلی نکالی جائے گی،اتور 28فروری کو نیو ایم اے جناح روڈ پر ایک عظیم الشان مظاہرہ کیا جائے گا،گورنر اور وزیر اعلی ہاؤس میں ہماری تقدیر کے فیصالے ہوتے ہیں،آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان گورنر ہاؤس پر کیا جائے گا،”حقوق کراچی تحریک“کے سلسلے میں تاجر، صنعت کار، وکلا ء، علما ء، ڈاکٹرز،انجینئرز اور مزدور سمیت تمام شعبہ زندگی سے وابستہ افراد سے رابطہ کیا جائے گا، جماعت اسلامی بہت جلد نوجوانوں کے درمیان سوشل میڈیا پرشہر کے مسائل اٹھانے کے حوالے سے مقابلے کا انعقاد کرے گی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ادارہ نور حق میں ”حقوق کراچی تحریک“کے اگلے مرحلے کی تفصیلات کے حوالے سے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر نائب امراء کراچی ڈاکٹر اسامہ رضی، راجہ عارف سلطان، انجینئر سلیم اظہر، سیکریٹری کراچی منعم ظفر خان، سیکریٹری اطلاعات کراچی زاہد عسکری اور دیگر بھی موجود تھے۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ وفاق نے تیل اور گھی کی قیمتوں میں بھی بے تحاشہ اضافہ کیا ہے،سینیٹ الیکشن کے نام پر انسانوں کی منڈیا ں لگی ہوئی ہیں، اس وقت ملک میں جمہوریت کا مذاق اڑایا جارہا ہے، کھرب پتی کروڑوں روپے خرچ کرکے اقتدار میں آتے ہیں اور کھربوں کی کرپشن کرتے ہیں، تمام پارٹیاں اس کام میں برابر کی شریک ہیں۔انہوں نے کہاکہ وفاقی اور صوبائی حکومت نے تعلیم کو تجارت بنا دیا ہے، لاکھوں روپے لے کرکر ڈاکٹرز بنائے جارہے ہیں،چار سالہ ڈگری کورس کے نام پر وفاقی اور صوبائی حکومت پرائیوٹ پڑھنے والوں کا نقصان کررہے ہیں،4سالہ ڈگری پروگرام سے متوسط طبقہ متاثر ہوگا، طلبہ کو اسکالرشپ دی جائے،اردو یونیورسٹی اور کراچی یونیورسٹی میں کافی اسامیاں خالی ہیں، جس کی وجہ سے تعلیمی نظام متاثر ہورہا ہے، جماعت اسلامی بہت جلد تعلیم کے حوالے سے وائٹ پیپر جاری کرے گی۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ پی ٹی آئی،پیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم نے کراچی کے مفادات کے خلاف اتحاد کیا ہوا ہے،پی ٹی آئی اور ایم کیو ایم نے جعلی متنازعہ مردم شماری کی وفاقی کابینہ میں منظوری دے کر کراچی دشمنی کی انتہا کر دی،کراچی کے عوام کے ساتھ مسلسل دھوکہ کیا جا رہا ہے، وفاقی حکومت نے گرین لائن منصوبے پر پانچ سالوں میں 50فیصد بھی کام نہیں کیا، شہر میں ٹرانسپورٹ کے مسائل کے حل کے لیے گرین لائن منصوبہ جلد مکمل کیا جائے، کراچی سرکلر ریلوے کے نام پر عوام سے دھوکہ نہ کیاجائے۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ کراچی کے شہریوں کو ان کا جائز اور قانونی حقوق دینے اور شہر کے گھمبیر مسائل کے حل کیلئے کراچی میں دو بارہ مردم شماری کرائی جائے،کوٹہ سسٹم ختم کیا جائے، کراچی کے نوجوانوں کو سندھ حکومت اور مقامی اداروں میں ترجیحی بنیادوں پر ملازمتیں دی جائیں،جعلی ڈومیسائل پر سرکاری ملازمتوں میں من پسند افراد اور نااہل لوگوں کو سیاسی بنیادوں پر بھرتی کیا جا رہا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -