جائیداد پر قبضہ‘ ابراہیم خان سمیت 10 ملزموں  کیخلاف کیس کی سماعت 6 مارچ تک ملتوی

  جائیداد پر قبضہ‘ ابراہیم خان سمیت 10 ملزموں  کیخلاف کیس کی سماعت 6 مارچ تک ...

  

 ملتان (خصو صی  ر پو رٹر) سول جج ملتان نے قتل و غارت کی منصوبہ بندی اور جائیداد پر قبضہ کرنے کے استغاثہ میں (بقیہ نمبر68صفحہ 7پر)

ملوث رکن قومی اسمبلی ابراھیم خان سمیت 10 ملزمان کے خلاف سماعت 6 مارچ تک ملتوی کردی ہے۔ عدالت نے مقدمہ کے گواہوں کو عدالت پیش ہونے کے لیے سمن نوٹس بھی جاری کردیے ہیں۔فاضل عدالت میں امتیاز حسین بنام خدا بخش وغیرہ کے عنوان سے مقدمہ زیر سماعت ہے۔ استغاثہ کے مطابق تھانہ بستی ملوک کے علاقے میں 28 نومبر 2019 کو قتل کی دھمکیاں دینے، قبضہ کرنے اور دیگر منصوبہ بندیوں سمیت دیگر  کا واقعہ رونما ہوا۔ جس میں الزام عائد کیا گیا کہ حکومتی ایم این اے ابراہیم خان کے سیکرٹری عمران شوکت نے دیگر ملزمان خدا بخش، محمد آصف، اقبال، اکمل، مختیار حسین، اعجاز حسین، عبدالحمید  اور تفتیشی افسر ایوب نے ملکر درخواست گزار کی جائیداد پر قبضہ کرنے کی سازش رچی ملزمان کو منع کیا گیا تو انہوں نے سنگین نتائج کی دھمکیاں دی، ملزمان نے کہا کہ انہیں سیاسی آشیر باد حاصل ہے وہ انکا کچھ نہیں بگاڑ سکتا تھا، درخواست گزار وکالت کے پیشے سے وابستہ ہے اس بارے سینئر وکلا کو بھی مطلع کرچکا ہے۔ ملزمان نے جائیداد پر قبضہ کے دوران سنگین نتائج کی دھمکیاں دیں تھیں ان کے خلاف کاروائی کی جائے۔ عدالتی حکم عدولی پر این اے 158 سے کامیاب پی ٹی آئی کے رکن قومی اسمبلی ابراہیم خان اور انکے سیکرٹری شوکت سمیت دیگر افراد کے عدالت نے وارنٹ گرفتاری جاری کیے تھے اور پولیس کو ملزمان کی گرفتاری یقینی بنانے کی ہدایت کی گئی تھی۔ گرفتاری سے بچنے کے لیے ملزمان کو 50 ہزار کے ضمانتی مچلکے جمع کرانے کی ہدایت کی گئی تھی جو جمع کرادیے گئے تھے۔

ملتوی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -