میانمار، فوجی بغاوت کیخلاف  عوام سٹر کوں پر، فائرنگ  سے 3افراد ہلاک

میانمار، فوجی بغاوت کیخلاف  عوام سٹر کوں پر، فائرنگ  سے 3افراد ہلاک

  

 ینگون(آئی این پی) میانمار میں اقتدار پر قابض ملٹری قیادت کی فوجی بغاوت کے خلاف عوامی احتجاج کو طاقت سے کچلنے کی دھمکی کے بعد سے 3مظاہرین گولیوں کا شکار بن کر ہلاک ہوچکے ہیں،نوجوان مظاہرین کی ہلاکت پر فوجی بغاوت کے خلاف جاری مظاہروں میں مزید شدت آگئی اور رنگون سے شروع ہونے والے مظاہرے ملک بھر میں پھیل گئے، مظاہرین نے پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر آنگ سان سوچی کی رہائی اور جمہوریت کی بحالی کے نعرے درج تھے،ادھر یورپی یونین نے عندیہ دیا ہے کہ وہ میانمار میں جمہوری حکومت کا تختہ الٹنے والی ملٹری قیادت پر پابندیاں عائد کرنے کو تیار ہیں جب کہ امریکا، کینیڈا اور برطانیہ میانمار کے اقتدار پر قابض فوجی قیادت پر پابندیاں عائد کرچکے ہیں،دوسری جانب اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس پہلے ہی فوج کے وحشیانہ طاقت کی مذمت کرتے ہوئے اسیر جمہوری رہنماؤں کی رہائی، تشدد بند کرنے، انسانی حقوق اور حالیہ انتخابات میں عوام کی رائے کا احترام کرنے کا مطالبہ کر چکے ہیں۔

میانمار بغاوت

مزید :

علاقائی -