نامعلوم افراد کا ایمرسن کالج پر دھاوا‘ طلباء کی پٹائی‘ ہنگامہ

نامعلوم افراد کا ایمرسن کالج پر دھاوا‘ طلباء کی پٹائی‘ ہنگامہ

  

ملتان (جنرل  ر پو رٹر‘ وقائع نگار) ایمرسن کالج میں تدریسی اوقات کے دوران نامعلوم آؤٹ سائیڈرز گھس آئے اور گھسنے والے نامعلوم افراد کی جانب سے طلبا پر تشدد کیا گیا اور(بقیہ نمبر24صفحہ 6پر)

 گیٹ کو بھی توڑنے کی کوشش کی گئی۔اساتذہ کے مطابق یہ اقدام ضلعی انتظامیہ کا لگتا ہے کیونکہ اس عمل میں کالج کے سی سی ٹی وی کیمرے بند تھے   تاہم پرنسپل ایمرسن کالج نے سی پی او ملتان کو مراسلہ لکھ دیا۔مراسلے میں سی.پی او ملتان سے کالج کے لیے سیکورٹی کے لیے پولیس فورس تعینات کر ے کا مطالبہ کر دیا گیا ہے۔کالج میں نامعلوم افراد کی جانب سے  تیسری بار کالج میں زبردستی گھسنے کی کوشش کی گئی۔اس دوران کالج کا گیٹ بھی توڑاگیا.کالج انتظامیہ نے حالات ہر قابو پانے کی کوشش کی مگر پولیس کے بغیر ممکن نہیں.پرنسپل نے سی پی او کو لکھا ہے کہ ایمرسن کالج کے لیے خصوصی پولیس فورس فراہم کی جائے جبکہ محکمہ تعلیم ساؤتھ پنجاب نے ایمرسن یونیورسٹی کے قیام پر اساتذہ اور طلبہ کی طرف سے روزانہ کے احتجاج کے مدنظر کالج اساتذہ لیڈرز کو آج ایڈیشنل سیکریٹری ایجوکیشنساؤتھ پنجاب  کے دفتر میں بلا لیا گیا ہے۔بتایا جاتا ہے کہ سیکریٹری تعلیم ساؤتھ پنجاب ڈاکٹر احتشام انور نے ایڈیشنل سیکریٹری تعلیم و ڈائریکٹر کالجز پروفیسر فرید شریف کو احتجاجی اساتذہ کے ساتھ مذاکرات کرنے کا ٹاسک دیا ہے۔مذاکرات کی دعوت پر گزشتہ روز کوئی احتجاج نہیں ہوا اور بائیکاٹ بھی نہیں کیا گیا۔آج مذاکرات کامیاب نہ ہوئے تو اساتذہ اور طلبہ پھر احتجاج شروع کر دیں گے۔ طلبا تنظیموں کے دو گروپوں کے مابین لڑائی جھگڑا ہوا‘ جس میں دو افراد زخمی ہوگئے،پولیس نے موقع پر پہنچ کر دونوں فریقین کے افراد کو گرفتار کرکے کارروائی شروع کردی ہے۔ تھانہ بی زیڈ کے علاقے ایمرسن کالج بوسن روڑ پر طلبا تنظیموں کے دوگروپوں اورنگزیب۔ ذیشان محمد علی۔ظفر۔نعمان۔محمود احمد، رانا ارسلان احمد، رانا عبدالرحمن کا محمد اسد،محمد مرسلین،محمد ارشد، اور شاہد کے مابین کسی بات پر تلخ کلامی ہوگئی۔بعد ازاں ہاتھا پائی پر ایک دوسرے پر حوروں،مکوں کا بے دریغ استعمال کیا گیا۔اس دوران بوسن روڈ میدان جنگ میں بدل دیا گیا۔ٹریفک بلاک ہوگئی۔لڑائی کے دوران دوافراد اورنگزیب اور محمود احمد زخمی ہوگئے،واقع کی اطلاع پر متعلقہ پولیس نے بھاری نفری کے ہمراہ موقع پر پہنچ کر دونوں طلبا تنظیموں کے تمام افراد کو گرفتار کرلیااور تھانہ منتقل کرنے کے بعد واقعہ کے متعلق کارروائی شروع کردی ہے۔

پٹائی‘ ہنگامہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -