بیگم شمیم اختر کا انتقال، چوہدری نثار جاتی امراءاظہار تعزیت کیلئے گئے تو ملاقات کے بعد شہبازشریف نے نوازشریف کو ٹیلیفون کر کے کیا کہا ؟ سینئر صحافی نے بڑا دعویٰ کر دیا

بیگم شمیم اختر کا انتقال، چوہدری نثار جاتی امراءاظہار تعزیت کیلئے گئے تو ...
بیگم شمیم اختر کا انتقال، چوہدری نثار جاتی امراءاظہار تعزیت کیلئے گئے تو ملاقات کے بعد شہبازشریف نے نوازشریف کو ٹیلیفون کر کے کیا کہا ؟ سینئر صحافی نے بڑا دعویٰ کر دیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )چوہدری نثار ایک لمبے عرصہ سے خاموش ہیں اور انہوں نے اپنی صوبائی نشست پر حلف بھی نہیں لیا تاہم گزشتہ کچھ عرصہ کے دوران وہ سیاسی طور پر کچھ متحرک ہوئے ہیں لیکن اس دوران بھی انہوں نے گنے چنے چند مخصوص افراد سے ہی ملاقاتیں کی ہیں ۔

 چوہدری نثار کی خاموشی پر سینئر صحافی نواز رضاکا کالم مقامی اخبار ’ جنگ نیوز‘ میں شائع ہواہے جس میں ان کا کہناتھا کہ چوہدری نثار سے صرف ان کے حلقہ انتخاب کے چیدہ چیدہ لوگ ان سے رابطے میں ہیں، ملاقاتیوں کی ایک طویل فہرست ان کے پولیٹکل سیکرٹری کے پاس پڑی ہے لیکن وہ کسی سے ملاقات کرتے ہیں اور نہ ہی کسی کو انٹرویو دیتے ہیں۔ ان کی ”پ±ر اسرار خاموشی“ افواہوں کو جنم دیتی ہے، اس پر طرفہ تماشا یہ کہ وہ بھی ان افواہوں کی تردید کرنے کی بجائے انجوائے کرتے ہیں۔

گزشتہ ہفتے میں ملکی سیاست میں کچھ اہم واقعات پیش آئے جو پاکستان میں سیاسی منظر کی تبدیلی کی طرف اشارہ کرتے ہیں۔ جب میاں نواز شریف کی والدہ محترمہ شمیم اختر کی وفات پر چوہدری نثار علی خان میاں شہباز شریف سے اظہار تعزیت کے لئے جاتی امرا گئے تو انہوں نے اس کے لئے اس دن کا انتخاب کیا جس روز مریم نواز جنوبی پنجاب کے دورے پر تھیں۔میاں شہباز شریف سے تعزیت سے قبل خواجہ سعد رفیق نے چوہدری نثار علی خان کے اعزاز میں ظہرانہ دیا جس میں کوئی اور مسلم لیگی رہنما مدعو نہیں تھا۔

ظہرانے کے بعد جاتی امرا میں فاتحہ خوانی کے بعد میاں شہباز شریف اور چوہدری نثار علی خان کے درمیان ایک گھنٹہ سے زائد ”ون آن ون“ ملاقات ہوئی، اس ملاقات میں ہونے والی گفتگو تو منظر عام پر نہیں آئی تاہم مسلم لیگی ذرائع نے بتایا کہ چوہدری نثار علی خان لندن میں میاں نواز شریف کو ٹیلی فون کرکے اظہار تعزیت کریں گے۔میاں شہباز شریف نے بھی لندن میں پیغام بھجوا دیا تھا کہ چوہدری نثار علی خان کے فون کا رسپانس دیا جائے، تاحال اس بات کی تصدیق نہیں ہو سکی کہ چوہدری نثار علی خان نے میاں نواز شریف کو فون کیا ہے یا نہیں۔

البتہ اس دوران سیاسی منظر نامے پر اچانک ہمارے دوست سینیٹر محمد علی درانی نمو دار ہوئے جن کی کوٹ لکھپت جیل میں میاں شہباز شریف سے ملاقات ہوئی۔ ظاہر ہے ان کی ملاقات انتظامیہ کی مرضی کے بغیر نہیں ہوئی اگرچہ ان کا دعویٰ ہے کہ وہ میاں شہباز شریف کے پاس پیر صاحب پگاڑا کا پیغام لے کر گئے ہیں لیکن واقفانِ راز کا کہنا ہے کہ ان کی ملاقات بڑوں کی اشیرباد سے ہوئی۔اس کے بعد ان کی مولانا فضل الرحمٰن سے ملاقات ہوئی لیکن وہ اگلے روز اچانک فیض آباد پہنچ گئے جہاں چوہدری نثار علی خان سے ان کی ملاقات ہوئی۔

پہلے تو دونوں اطراف سے اِس ملاقات کی تصدیق نہیں کی گئی پھر خود ہی چوہدری نثار علی خان کے پولیٹکل سیکرٹری نے ملاقات کی تصدیق کر دی۔ معلوم نہیں سینیٹر محمد علی درانی چوہدری نثار علی خان کیلئے کس کا پیغام لے کر گئے تھے لیکن ایک بات واضح ہو گئی کہ کسی نہ کسی سطح پر کچھ ہو رہا ہے۔

مزید :

قومی -