وقف املاک ایکٹ ، علامہ طاہر اشرفی نے جلد ہی علماء و مشائخ کو خوشخبری سنانے کا اعلان کردیا

وقف املاک ایکٹ ، علامہ طاہر اشرفی نے جلد ہی علماء و مشائخ کو خوشخبری سنانے ...
وقف املاک ایکٹ ، علامہ طاہر اشرفی نے جلد ہی علماء و مشائخ کو خوشخبری سنانے کا اعلان کردیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم کے معاون خصوصی علامہ حافظ طاہر محمود اشرفی نے کہا ہے کہ تمام مدارس و مساجد ، عبادتگاہوں میں یکم  تا 30 مارچ تک ایک قوم ایک منزل،امن،اخوت ،اعتدال کےعنوان پر استحکام پاکستان کانفرنسیں ، سیمینارز اور اجتماعات اور علماء و مشائخ کنونشن منعقد ہوں گے،وقف املاک ایکٹ پر علماء و مشائخ کو جلد خوشخبری دیں گے ،مدارس و مساجد کا ہر سطح پر تحفظ کیا ہے اور کریں گے ، قاضی اور مفتی کو متعصب نہیں ہونا چاہیے ، مدارس و مساجد کے ذمہ داروں کو کوئی شکایت ہے تو ہم حاضر ہیں،اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کیلئے منبر و محراب اپنا کردار ادا کرتا رہے گا،اقلیتوں کے حقوق کسی کو غصب نہیں کرنے دیں گے،انٹر فیتھ ہارمنی کونسلز سے رواداری ، محبت اور اخوت پیدا ہو گی ،مدارس کی رجسٹریشن ، بنک اکاؤنٹ اور دیگر امور نئے تعلیمی سال سے قبل حل کیے جائیں گے،مدارس کی رجسٹریشن کا وزارت تعلیم سے منسلک کیا جانا موجودہ حکومت کا کارنامہ ہے،بچوں پر تشددکےحوالےسےقومی اسمبلی سے پاس ہونے والے بل کی مکمل تائید وحمایت کرتے ہیں۔

جامعہ مسجد معاذ بن جبل میں علماء و مشائخ کنونشن سےخطاب کرتے ہوئےعلامہ طاہراشرفی کا کہنا تھا کہ فتوی بازی سےحکومت نہیں جائے گی ،غیر شرعی اور تعصب پرمبنی فتوے اورفیصلےکل قوم نےتسلیم کیےاور نہ آئندہ کرے گی،موجودہ حکومت نےعالمی سطح پر ناموس رسالت ﷺ اورعقیدہ ختم نبوتﷺ کے تحفظ کی جدوجہد کی اور کر رہی ہے،اگر عقیدہ ختم نبوت و ناموس رسالتﷺ ، مدارس و مساجد کو کوئی خطرہ ہوا تو سب سے پہلے میدان میں ہم نکلیں گے،ہم نے ماضی میں بھی عقیدہ ختم نبوت و ناموس رسالتﷺ ، مدارس و مساجد کی چوکیدار کی ہے اور آئندہ بھی کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ یکم مارچ تا30مارچ ملک بھرمیں ایک قوم ایک منزل(امن،اخوت،اعتدال)استحکام پاکستان کانفرنسیں،سیمینارز اوراجتماعات  منعقد ہوںگے ، جن میں تمام مذاہب ومکاتب فکر کے قائدین شریک ہوں گے،و قف املاک بورڈ ایکٹ میں غیر شرعی شقوں کے حوالہ سے اسلامی نظریاتی کونسل کی رائے حتمی ہو گی ، وقت املاک بورڈ ایکٹ پر علماء ومشائخ ، مدارس و مساجد کو خوشخبری دیں گے، مدارس و مساجد کے محافظ ہیں،مدارس کے خلاف کوئی کارروائی  کی ہے نہ کریں گے،معاشرے میں اخوت ، محبت ، رواداری کے فروغ کیلئے محراب و منبر کو مزید موثر کردار ادا کرنا ہے،پاکستان علماء کونسل کے تحت خواتین کی تعلیم کے حوالے سے ملک گیر مہم چلائی جائے گی،قاضی اور مفتی کو تعصب اور پسند نا پسند کی بناء پر فیصلے اور فتوے نہیں دینے چاہئیں۔

علامہ طاہر محمود اشرفی نے کہا کہ امن کمیٹیوں کے نام پر بلیک میل کرنے والے عناصر کے خلاف قانون حرکت میں آ ئے گا،انٹر فیتھ ہارمنی کیلئے کام کرنے والے تمام اداروں اور این جی اوز کو ایک پلیٹ فارم پر لائیں گے، پاکستان اور عالم اسلام اس وقت جن حالات میں ہے ان میں وحدت ، اخوت ، اتحاد اور باہمی رابطوں کو مضبوط بنانے کی ضرورت ہے،وزیر خارجہ کے مصر کے دورے سے پاکستان مصر تعلقات میں دس سال بعد مثبت بہتری آئی ہے ،دیگر عرب ممالک کے ساتھ بھی تعلقات میں بھی مزید استحکام آ رہا ہے ، آج مدارس و مساجد گذشتہ ادوار حکومت سے زیادہ محفوظ ہیں ،مدارس کی رجسٹریشن بنک اکاؤنٹس اور تجدید کے مسائل کا حل نکال لیا گیا ہے،مدارس کے نئے امتحانی بورڈز سے مدارس کو تقویت ملے گی ،ہم نے کل بھی مدارس و مساجد کا تحفظ کیا تھا آج بھی کریں گے۔

معاون خصوصی نے کہا کہ بعض لوگ مدارس میں خوف پیدا کرنے کی کوششیں کر رہے ہیں ،مدارس کے دینی نصاب میں کوئی تبدیلی نہیں ہو گی ،مدارس کی آزادی اور خود مختاری کو کوئی سلب نہیں کر سکتا ہے اور نہ کرے گا،موجودہ حکومت نے مدارس کووزارت تعلیم کے ساتھ رجسٹریشن کا نظام دیا ہے جو ایک تاریخی کارنامہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے سلامتی کے اداروں اور مقتدر اداروں ، عدلیہ اور افواج کے وقار کو مجروح کرنے کی سازشیں کی جا رہی ہیں،  شریعت اسلامیہ قاضی اور مفتی کو حکم دیتی ہے کہ مقدمہ سنتے اور فتویٰ دیتے ہوئے وہ اپنی سوچ و فکر کو نہیں حقائق کو سامنے رکھے،آج بعض ایسے لوگ بھی مفتی اور منصف ہونے کے دعویدار ہیں جو اپنے دلوں میں تعصب رکھتے ہیں اور اپنے فیصلوں اور فتوئوں کے ذریعے اپنی سوچ مسلط کرنا چاہتے ہیں ، قوم کو ملک و قوم کے خلاف سازشوں کا متحد ہو کر مقابلہ کرنا ہو گا، 28 فروری کو لاہور ، آٹھ مارچ کو سرگودھا ، 16-17 مارچ کو کراچی میں علماء و مشائخ کنونشن ہوں گے۔

مزید :

قومی -