وزارت سائنس و ٹیکنالوجی اور اسلام آباد چیمبر کامشترکہ کوششوں پر اتفاق

وزارت سائنس و ٹیکنالوجی اور اسلام آباد چیمبر کامشترکہ کوششوں پر اتفاق

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) معیشت کومضبوط کرنے کیلئے ہنرمند افرادی قوت اور انٹرپرینیورشپ کی اہمیت کو مدنظر رکھتے ہوئے اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری اور وزارت سائنس و ٹیکنالوجی نے مشترکہ کوششوں سے چیمبر میں ایک ٹیکنیکل بزنس انکیونیشن سنٹر قائم کرنے پر اتفاق کیا ہے جس کا مقصد معاشرے کے پسماندہ افراد کو ہنر مند بنانے کے ساتھ ساتھ یونیورسٹی گریجویئٹس میں انٹرپرینیورشپ کو فروغ دینا ہو گا۔اس بات کا اتفاق وزارت سائنس و ٹیکنالوجی کے ایک وفد کے چیمبر کے دورے کے موقع پر کیا گیا جس نے وزارت کے مشیر ڈاکٹر سید شاہد حسین کی قیادت میں اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کا دورہ کیا ۔ وفد سے خطاب کرتے ہوئے اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر شعبان خالد نے اس اہم منصوبے کیلئے تعاون کی یقین دہانی کرانے پر ڈاکٹر سید شاہد حسین اور ان کی وزارت کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ بزنس انکیونیشن سنٹر کو قائم کرنے میں وزارت سائنس و ٹیکنالوجی کا تعاون بہت اہمیت کا حامل ہے کیونکہ اس سہولت سے علاقے کے یونیورسٹی طلبا کو انٹرنیورشپ کیلئے تیار کر کے اور غریب نوجوانوں کو ہنر کی تعلیم فراہم کر کے انہیں نہ صرف اس قابل بنایا جائے گا کہ وہ اپنا مستقبل بہتر کر یں بلکہ ملک کی اقتصادی ترقی میں بھی ایک فعال کردار ادا کریں ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان عام طور پر کم قیمت والی صنعتی مصنوعات برآمد کرتا ہے جس سے برآمدت صلاحیت کے مطابق فروغ نہیں پا رہی ہیں تاہم انہوں نے کہا کہ صنعتوں کی پیداواری صلاحیت کو بہتر کرنے اور ویلیو ایڈیڈ صنعتی مصنوعات تیار کرنے کیلئے وزارت سائنس و ٹیکنالوجی اور اس کے ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ اداروں کا کردار بہت اہم ہے۔

 انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اسلام آباد چیمبر آف کامرس اور وزارت سائنس وٹیکنالوجی باہمی تعاون بڑھا کر صنعتوں اور ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ اداروں کے مابین قریبی روابط فروغ دینے کی کوشش کریں تا کہ عالمی میعار کی صنعتی مصنوعات تیار کی جائیں جو ملکی ضروریات پوری کرنے کے ساتھ ساتھ برآمدات کو فروغ دے سکیں۔ انہوں نے کہا کہ ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ اداروں اور صنعتی شعبے کی مشترکہ کوششوں سے ہی صنعتی مسائل کا مقامی حل نکالا جا سکتا ہے اور ایسے پائلٹ منصوبے شروع کئے جا سکتے ہیں جو کامیابی سے ہمکنار ہوں۔ وزارت سائنس وٹیکنالوجی کے مشیر ڈاکٹر سید شاہد حسین نے اپنے خطاب میں کہا کہ وزارت کے ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ والے ادارے صنعتوں کی سہولت کیلئے بہت سی سرگرمیوں میں مصروف ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وزارت سائنس و ٹیکنالوجی نے ایک کمرشلائیزیشن سیل قائم کر رکھا ہے جو کہ ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ آرگنائزیشنز اور تعلیمی اداروں کا ملکی صنعتی شعبے کے ساتھ روابط مضبوط کرنے کیلئے کام کر رہا ہے تا کہ صنعتی شعبے کی ضرورت کے مطابق تحقیق و ترقی کی کوششیں کی جائیں اور صنعتی شعبے کے مسائل کا بہتر حل نکالا جائے۔انہوں نے کہا کہ چیمبر اور وزارت سائنس و ٹیکنالوجی کے درمیان قریبی تعلقات کا قیام صنعتی شعبے کو مضبوط کرنے اور اعلیٰ معیار کی صنعتی مصنوعات تیار کرنے کیلئے اشد ضروری ہے۔پاکستان کونسل آف سائٹیفک اینڈ انڈسٹریل ریسرچ کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر شہزاد عالم نے کہا کہ ان کے ادارے نے سستی بجلی پیدا کرنے کیلئے کول واٹر سلیری کی شکل میں تیل کا ایک متبادل حل نکالا ہے۔ انہوں نے چیمبر کے وفد کو دعوت دی کہ وہ پی سی ایس آئی آر لاہور کا دورہ کر کے خود اس کا جائزہ لیں تا کہ صنعتی شعبہ سستی بجلی پیدا کرنے کیلئے اس سے استفادہ حاصل کر سکے۔ نیشنل انسٹیٹیوٹ آف الیکٹرانکس کے پراجیکٹ ڈائریکٹر احمد ندیم صدیقی اور پاکستان سٹینڈرڈز اینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی کے انجینئر وسیم احمد نے صنعتکاروں کو اپنے اداروں کی سرگرمیوں کے بارے میں آگاہ کیا جو وہ صنعتی شعبہ کی بہتری کیلئے کر رہے ہیں۔ مقامی صنعتکاروں نے وزارت سائنس و ٹیکنالوجی کے ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ اداروں کی ان سہولیات اور ٹیکنالوجیز میں کافی دلچسپی ظاہر کی جو وہ صنعتی شعبہ کو مزید فعال بنانے کیلئے کر رہے ہیں اور کہا کہ وہ ان اداروں کی سرگرمیوں سے بھرپور استفادہ حاصل کرنے کی کوشش کریں گے۔

مزید : کامرس