سوئس گلوبل فنڈ ز کی امداد کا بڑا حصہ خورد برد کیا جا رہا ہے،زبیر ملک

سوئس گلوبل فنڈ ز کی امداد کا بڑا حصہ خورد برد کیا جا رہا ہے،زبیر ملک

لاہور(کامرس رپورٹر)وفاق ہائے ایوان صنعت و تجارت کے صدر زبیر احمد ملک نے مہلک بیماریوں کے خاتمہ کے لئے پاکستان کو گلوبل فنڈ سے ملنے والے عطیات میں بڑے پیمانے پر گھپلوں پر تشویش ظاہر کرتے ہوئے غیر جانبدارانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔ملیریا، ٹی بی اور ایڈز کے خاتمہ کے لئے سوئس گلوبل فنڈ سے وصول ہونے والی امداد کا بڑا حصہ خورد برد کیا جا رہا ہے جس سے ملک میں ان بیماریوں میں کمی کے بجائے اضافہ ہو رہا ہے جبکہ ملک کی بدنامی بھی ہو رہی ہے۔ایف پی سی سی آئی کے صدر زبیر احمد ملک نے اےک بےان کہا کہ اس امداد کے استعمال کے لئے کنٹری کوآرڈینیشن مکینزم بنایا گیا ہے جس میں شفافیت یقینی بنانے کے لئے نجی شعبہ کو بھی شامل کیا گیا ہے مگر بیوروکریسی نے نجی شعبہ کے نمائندوں سمیت اعتراض کرنے والے تمام عناصر کو مکھن سے بال کی طرح نکال کر اپنا کھیل شروع کر رکھا ہے ۔زبیر احمد ملک نے کہا کہ وزارت صحت کی جانب سے تمام شکایات ور تجاویزردی کی ٹوکری میں ڈالنے کا سلسلہ جاری ہے اور اگر اس سلسلہ کو روک کر مانیٹرنگ کا مناسب انتظام نہ کیا گیاتو تین سو پچاس ملین ڈالر کی امداد کا بڑا حصہ ضائع ہو جائے گاجبکہ عوام کے مسائل میں اضافہ ہو گا۔انھوں نے قومی احتساب بیورو سے اس میگا سکینڈل کی تحقیقات اور تمام ملزموں کے کلاف کاروائی کا مطالبہ بھی کیا تاکہ امداد کی بندش کی نوبت نہ آنے پائے۔

مزید : صفحہ آخر