پولیس نے نعش حوالے کرنے کےلئے فیس مقرر کردی، ورثاءکا تھانے کا گھیراﺅ

پولیس نے نعش حوالے کرنے کےلئے فیس مقرر کردی، ورثاءکا تھانے کا گھیراﺅ

لاہور (کرائم سیل) تھانہ فیکٹری ایریا کے علاقہ میں دو کم سن بچوں کا باپ محنت کش جاوید حسین گزشتہ روز کرنٹ لگنے سے جاں بحق ہو گیا۔ پولیس نے نعش ورثاءکے حوالے کرنے کے نام پر فیس مقرر کر دی، ورثاءکا تھانے کا گھیراﺅ۔ تفصیلات کے مطابق بورے والا وہاڑی کا رہائشی محنت کش جاوید حسین والٹن روڈ پر ایک تعمیر ہونے والے پلازہ میں مزدوری کر رہا تھا کہ گزشتہ روز دوران محنت مزدوری کے دوران جاوید حسین کو کرنٹ لگ گیا جس پر اسے جنرل ہسپتال لے جایا گیا مگر بری طرح جھلس جانے پر جانبر نہ ہو سکا۔ جاوید حسین کا بڑا بھائی فدا حسین لاش لے کر آبائی گاﺅں جانے لگا تو تھانہ فیکٹری ایریا کا تھانیدار منصور احمد ہسپتال آ گیا اور لاش لے جانے پر مبینہ طور پر فیس کی ڈیمانڈ شروع کر دی ، فیس نہ ملنے پر لاش اٹھا کر تھانے لے آیا جس پرمتوفی محنت کش جاوید حسین کے ساتھی مزدور سراپا احتجاج بن گئے اور تھانے کا گھیراﺅ کر کے پولیس کے خلاف نعرے بازی کی ۔ایس پی کینٹ عمر ریاض نے سخت نوٹس لے لیا اور لاش ورثاءکے حوالے کرنے کا حکم دیا، متوفی محنت کش کے ساتھی مزدوروں عظمت علی اور نشان احمد نے نمائندہ ”پاکستان“ کو بتایا کہ تھانیدار نے نعش حوالے کرنے کی بجائے بلیک میل کرنا شروع کر دیا جس سے سخت اذیت کا سامنا کرنا پڑا، جبکہ تھانیدار منصور احمد کے خلاف اے ایس پی ڈیفنس کو انکوائری کا حکم دے دیا۔ اس حوالے سے ایس ایچ او فیکٹری ایریا انسپکٹر ناصر حنیف نے بتایا کہ ورثاءکے انتظار کے لئے لاش قبضہ میں لی گئی تھی اور ورثاءکے آنے پر لاش ورثاءکے حوالے کر دی گئی ہے ۔ تھانیدار کے خلاف بھی انکوائری کی جا رہی ہے جبکہ تھانیدار منصور احمد نے بتایا کہ نعش ورثاءکے حوالے کرنے میں ”مک مکا“ کا الزام غلط ہے ۔

مزید : علاقائی