حکومت سے مذاکرات کامیاب، دھرناختم، مستونگ دھماکے میں جاں بحق افراد کی تدفین کردی گئی

حکومت سے مذاکرات کامیاب، دھرناختم، مستونگ دھماکے میں جاں بحق افراد کی تدفین ...
حکومت سے مذاکرات کامیاب، دھرناختم، مستونگ دھماکے میں جاں بحق افراد کی تدفین کردی گئی

  

کوئٹہ،مستونگ(مانیٹرنگ ڈیسک)حکومت سے کامیاب مذاکرات کے بعد مستونگ دھماکے میں جاں بحق ہونے والے 27 زائرین کو سپرد خاک کردیا گیا،مشتعل افراد نے زبردست نعرے بازی کی۔وزیر داخلہ چوہدری نثار اور وزیر اطلاعات پرویز رشید کے سانحہ مستونگ کے خلاف لاشوں کے ہمراہ دھرنا والے ہزارہ برادری کے عمائدین اور شیعہ رہنماو¿ں سے مذاکرات کامیاب ہونے کے بعد ہزارہ برادری نے دھرنا ختم کرنے کا اعلان کیا ۔مستونگ دھماکے میں جاں بحق 27 افراد کی نماز جنازہ ہزارہ ٹاو¿ن کے قبرستان کے میدان میں ادا کی گئی جس میں مجلس وحدت المسلمین، شعیہ علما کونسل اور مذہبی رہنماو¿ں سمیت ہزارہ برادری کے لوگوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ نماز جنازہ کی ادائیگی کے بعد چار افراد کی تدفین ہزارہ ٹاو¿ن قبرستان جبکہ دیگر کی تدفین بہشت زینب قبرستان میں کردی گئی ، اس موقع پر رقت آمیز مناظر دیکھنے میں آئے ۔ تدفین کے موقع پر قبرستان کے اطراف میں سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے،علاقے کی فضائی نگرانی جاری رہی۔ پولیس کےساتھ ایف سی اہلکار بھی قبرستان سے ملحقہ پہاڑوں پر تعینات کیے گئے تھے۔سانحہ مستونگ کے بعد فورسز کی طرف سے ٹارگٹڈ آپریشن جاری ہے جس کی نگرانی آئی جی ایف سی میجر جنرل اعجاز شاہد کررہے ہیں۔ مستونگ کے علاقے کانک اور درینگڑھ میں کارروائی کے دوران 20 مشتبہ افراد کو گرفتار بھی کیا گیا ہے۔قبل ازیں کوئٹہ کے علمدار روڈ پر شیعہ رہنماو¿ں اور ہزارہ قبیلے کے عمائدین سے کامیاب مذاکرات کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے چوہدری نثار نے کہا کہ مستونگ واقعے نے پوری قوم کو غمزدہ کردیا لیکن یقین دلاتے ہیں کہ دہشت گرد بچ نہیں سکتے اور واقعے میں ملوث ملزمان کے خلاف بھرپور کارروائی کرکے انہیں انصاف کے کٹھرے میں لائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہزارہ برادری پرامن ترین اور پاکستان سے محبت کرنے والی قوم ہے، ہزارہ برادری نے صبر کے کئی کڑوے گھونٹ پی کر دہشت گردوں کا مقابلہ کیا لیکن افسوس کہ دہشت گردوں نے ایک بار پھر انہیں مستونگ میں نشانہ بنایا تاہم حکومت ہزارہ برادری کو ایک بار پھر پرامن ماحول فراہم کرے گی، ان کے مطالبات پورے کئے جائیں گے اور ان کے ساتھ کئے گئے ظلم کا بدلہ لیا جائے گا۔واضح رہے کہ مستونگ میں منگل کو زائرین کی بس پر حملے کے خلاف ہزارہ برادری کی جانب سے بدھ کو کوئٹہ کے علمدار روڈ پر دھرنا گیا تھا تاہم گزشتہ روز وزیر داخلہ کے ہزارہ برادری کے عمائدین اور شیعہ رہنماو¿ں سے مذاکرات کے بعد ہزارہ برادری نے دھرنا ختم کرنے کا اعلان کر دیا تھا۔

مزید : کوئٹہ /اہم خبریں