’میں داخلے کے انٹرویو میں سب سے پہلے یہ چیز دیکھتا ہوں کہ کیا لڑکی۔۔۔‘ مرد ٹیچر نے انٹرنیٹ پر ایسی بات لکھ دی کہ لوگ غصے سے آگ بگولا ہوگئے

’میں داخلے کے انٹرویو میں سب سے پہلے یہ چیز دیکھتا ہوں کہ کیا لڑکی۔۔۔‘ مرد ...
’میں داخلے کے انٹرویو میں سب سے پہلے یہ چیز دیکھتا ہوں کہ کیا لڑکی۔۔۔‘ مرد ٹیچر نے انٹرنیٹ پر ایسی بات لکھ دی کہ لوگ غصے سے آگ بگولا ہوگئے

  

بیجنگ (نیوز ڈیسک) استاد اپنے طلباءو طالبات کے لئے روحانی باپ کا درجہ رکھتا ہے لیکن چین میں ایک استاد نے انٹرنیٹ پر سب کے سامنے ایسی بات کا انکشاف کر دیا کہ اسے روحانی باپ کی بجائے شیطان صفت بھیڑیا کہا جائے تو غلط نہ ہو گا۔

ویب سائٹ شنگھائسٹ کی رپورٹ کے مطابق بیجنگ فارن سٹیڈیز یونیورسٹی کے براڈکاسٹنگ سکول میں فرائض سرانجام دینے والے اسسٹنٹ پروفیسر کیاﺅ مو نے ایک بلاگ پوسٹ میں لکھا ”ہم انٹریو کرنے والے بھی انسان ہیں، جیسا کہ آپ جانتے ہیں ۔ میں انٹرویو کے لئے آنے والی لڑکیوں میں سب سے پہلے نسوانی حسن پر نظر ڈالتا ہوں، اس کے بعد چہرہ اور پھر کولہے اور ٹانگیں دیکھتا ہوں۔ جب کوئی طالبہ کمرے میں داخل ہوتی ہے تو اس کے پورے جسم پر بھرپور نظر ڈالتا ہوں، جبکہ اس کے بیٹھنے پر چہرے اور نسوانی حسن کو بغور دیکھتا ہوں۔“

سب سے بڑا معمہ حل ہوگیا، بالآخر سائنسدانوں نے شادی کرنے کی بہترین عمر بتادی

کیاﺅ کی بیہودہ بلاگ پوسٹ سامنے آنے پر چینی سوشل میڈیا پر ایک ہنگامہ برپا ہو گیا ہے۔ ان پر تنقید کرنے والے انٹرنیٹ صارفین اس بات پر حیران ہیں کہ ایسے شرمناک خیالات رکھنے والا شخص ایک ممتاز یونیورسٹی میں ایک دہائی سے داخلے کے امور سے وابستہ ہے۔

بیجنگ فارن سٹڈیز یونیورسٹی کی جانب سے کیاﺅ کی بلاگ پوسٹ پر کوئی واضح بیان سامنے نہیں آیا، تاہم یہ ضرور کہا گیا ہے کہ اس معاملے کی تحقیقات کی جائیں گی۔ تنازعہ بڑھ جانے پر کیاﺅ نے بھی ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ وہ یہ نہیں کہہ رہے تھے کہ یہ ان کی داخلہ پالیسی ہے، وہ تو صرف محسوسات کی بات کررہے تھے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -