امرود کی پیداوار پر توجہ دے کر برآمدات میں اضافہ ممکن ہے، جان خاصخیلی

امرود کی پیداوار پر توجہ دے کر برآمدات میں اضافہ ممکن ہے، جان خاصخیلی

اسلام آباد (اے پی پی) آم اور کیلے کے بعد امرود پیداوار کے حوالے سے سندھ کا تیسرا بڑا پھل ہے۔ امرود کی پیداوار منافع بخش کاروبار بنتا جا رہا ہے جس کے باعث صوبہ میں امرود کے باغات میں نمایاں اضافہ ہوا ہے۔ معروف تجزیہ کار جان خاصخیلی نے اپنی تحقیقی رپورٹ میں کہا ہے کہ اس وقت صوبہ سندھ میں پیدا ہونے والا امرود ملک بھر کی منڈیوں میں فروخت ہو رہا ہے جبکہ امرود کی برآمدات سے خاطر خواہ زرمبادلہ بھی کمایا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کینو پاکستان کا بڑا برآمدی پھل ہے تاہم امرود کی پیداوار اور پراسیسنگ پر توجہ دے کر اس کی برآمدات میں اضافہ کیا جا سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ دوران سال امرود کی اوسط قیمت 1800 تا 2000 روپے فی 15 تا 20 کلو کے قریب رہتی ہے جبکہ صارفین کو 80 تا 100 روپے فی کلو کی قیمت پر فروخت کیا جاتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ امرود کی پیداوار میں اضافہ اور پراسیسنگ کی سہولیات کی فراہمی سے اس کی برآمدات میں نمایاں اضافہ کیا جا سکتا ہے۔

مزید : کامرس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...