نذیر گارڈن کے عقبی حصے میں سرکاری اراضی پر تعمیرات جاری

نذیر گارڈن کے عقبی حصے میں سرکاری اراضی پر تعمیرات جاری

لاہور(اپنے نمائندے سے) نذیر گارڈن کی بیک سائیڈ پر قبضہ گروپ کی جانب سے وفاقی حکومت کی 100کنال سے زائد اراضی پر قبضہ کرتے ہوئے پختہ تعمیرات کا سلسلہ جاری ، 3ماہ کے اندر 50سے زائد نئے گھر تعمیر کئے جاچکے ہیں تحصیل شالیمار کی ریونیو انتظامیہ کی ملی بھگت سے مفت حاصل کی جانے والی وفاقی حکومت کی قیمتی اراضی کو لینڈ مافیا دن رات کی بنیادوں پر فروخت کرنے میں مصروف ہے اور نذیر گارڈن کے قبضہ گروپ نے سرکاری زمین کی فروخت اور تعمیرات کے دوران دعویٰ کر رکھا ہے کہ ہمار ی تعمیرات کو روکنے کے لئے کوئی افسر یاملازم نہیں آئے گااس لئے خریدار بے دھڑک ہو کر سستے داموں سرکاری زمین کی خرید و فروخت کر سکتے ہیں اور لینڈ مافیا کے یہ دعوے اس وقت حقیقت کا روپ دھار چکے ہیں ۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ تحصیل شالیمار کی انتظامیہ کو جس غریب کی جانب سے پیسے نہ دیئے جائیں وہاں کارروائی کر دیتے ہیں اور جہاں سے حصے ملتے ہیں وہاں اپنی نگرانی میں تعمیرات کرواتے ہیں مقامی رہائشیوں نے شدید احتجا ج کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر لاہور سمیر احمد اور ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر طاہر فاروق سے فوری نوٹس لینے کی اپیل کی گئی ہے دوسری جانب اسسٹنٹ کمشنر شالیمار علی اکبر بھنڈر نے الزامات کی تردید کی ہے اور روزنامہ پاکستان کی نشاندہی پر ریونیو سٹاف کو فوری رپورٹ کرنے اور تعمیرات روکنے کا حکم دیا ہے اسسٹنٹ کمشنر شالیمار علی اکبر بھنڈر کا کہنا ے کہ سرکاری زمین پر تعمیرات کسی صورت برداشت نہیں کی جائیں گی لینڈ مافیا اور قبضہ گروپ سے آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائے گا نزیر گارڈن کی بیک سائیڈ پر سرکاری زمین پر قابض میاں نعیم کا کہنا ہے کہ ہمارے آباؤ اجداد کے زمانے سے یہ کام ہوتا آرہا ہے ہمارے پا س زمین کے قبضے پرانے ہیں ہم اس کے مالک ومختار ہیں اس کو فروخت کرنے کا مکمل اختیار حاصل ہے

نذیر گارڈن

مزید : میٹروپولیٹن 1