ڈسٹرکٹ جوڈیشری کو مضبوط کیا، اصولوں کی جنگ لڑتے رہینگے: چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ

ڈسٹرکٹ جوڈیشری کو مضبوط کیا، اصولوں کی جنگ لڑتے رہینگے: چیف جسٹس لاہور ...

ملتان (خبر نگار خصوصی) چیف جسٹس لاہورہائیکورٹ سیدمنصورعلی شاہ نے کہاہے کہ انھیں فخرہے کہ وہ اس مضبوط ٹیم کاحصہ ہیں کیونکہ اس میں ہرفردکااہم کردارہے اورہم سب نے مل کرکام کیاہے اوراپنی انتھک محنت اورمثبت وسوچ نے کوئی رکاوٹ نہیں آنے دی ہے انھوں نے کہا کہ فنکشن لیٹ ہوا کیونکہ لاہور سے دیر سے نکلے ہیں۔تمام ججز صاحبان اور ملازمین کا شکر گزار ہوں۔ انھوں نے کہاکہ ڈسٹرکٹ جوڈیشری کو ایڈمنسٹریٹریشن کے ذریعے چلایا گیا۔ سابق چیف جسٹس کی مدد سے ڈسٹرکٹ جوڈیشری کو مضبوط کیااور آپ کی ایڈمنسٹریٹریشن بنائی تاکہ مسائل حل ہوں اور کوشش کی گئی کہ آپکو آزاد ادارہ بنایا جائے۔ جس کی وجہ سے لوگوں کو ریلیف مل رہا ہے آپ لوگوں کی وجہ سے ہے۔ یہ بہترین ادارہ ہے جس میں لوگوں کو انصاف دیا جاتا ہے۔ ہم مل جل کر اس ادارے کو چلا رہے ہیں۔ آپ اس ادارے کو اپنی ماں کا درجہ دیں۔انھوں نے کہاکہ وہ بد قسمت شخص ہے جو اس ادارے میں کرپشن کرتا ہے یہ ادارہ کرپشن فری ہے اس لئے جب ججز آپ سے رائے لیں تو انکو درست مشورہ دیں کیونکہ ججز صاحبان کو صحیح گائیڈ کرنا آپ کا فرض ہے تمام ملازم تیار ہوکر ادارے میں آیا کریں اورہمیشہ مثبت رہیںآپ لوگوں کے لئے آسانیاں پیدا کریںآپ کے پاس جو سائل آتا ہے پریشان ہوتا ہے اپ مسکراتے ہوئے لوگوں سے ملیں آپکی تنخواہیں اچھی ہیں۔ آپ اپنے آپ کو اور اس ادارے کو مضبوط کریں ملتان والوں نے پچھلے دنوں میں پریشر زیادہ لیا ہے لیکن ہم اصول کی جنگ لڑتے رہیں ہیں اور آئیندہ بھی لڑیں گے دریں اثناء چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ سید منصور علی شاہ کی ملتان بینچ کے ملازمین کی جانب سے دیئے گئے عشائیہ میں شرکت میں آمد پر چیف جسٹس کو گارڈ آف آنر پیش کیا گیا۔ اس موقع پر رجسٹرار لاہور ہائیکورٹ خورشید انور رضوی بھی انکے ہمراہ تھے جبکہ ہائیکورٹ کے ملازمین نے پھولوں کی پتیاں نچھاور کر کے چیف جسٹس کا بھر پور استقبال کیا۔قبل ازیں جسٹس عابد عزیز شیخ نے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ کی بطور چیف جسٹس ڈیڑھ سالہ ادارے کے لئے خدمات کو سراہتے ہیں کہ ایڈمنسٹریٹریشن کے ذریعے ملازمین کے مسائل کو حل کرنے کے لیے اقدامات کئیے ہیں۔چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے ڈیڑھ سال کے عرصے میں ادارے کے لئے مثالی کام کیا۔ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے مصالحتی کورٹس کا قیام کر کے مثالی کام کیا نیز وومن کورٹس، چلڈرن کورٹس کا قیام مثالی ہے اور لاہور کی طرح ملتان میں بھی اسٹیبلشمنٹ کے لئے ریسٹورنٹ کا قیام عمل میں لایا جائے۔ہائیکورٹ عشائیہ کے دوران ملازمین کے ساتھ گھل مل گئے بعدازاں ہائیکورٹ ملتان بینچ میں ڈیڑھ گھنٹہ قیام کے بعد ہائیکورٹ ملتان بینچ کے ججزکے ساتھ بہاولپور کے لئے روانہ ہو گئے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...