گیس، بجلی کا بحران بدترین، پریشان حال صارفین کی حکومت کو بددعائیں

گیس، بجلی کا بحران بدترین، پریشان حال صارفین کی حکومت کو بددعائیں

ملتان (سٹاف رپورٹر) سوئی گیس کا بحران بدترین ہو گیا ۔پریشان حال صارفین حکومت اور سوئی گیس حکام کو بددعائیں دینے لگے ۔تفصیل کے مطابق ملتان اور گردونواح میں سوئی گیس کا بحران بدترین ہونے سے خو اتین کو کھانا بنانے میں شدید مشکلات درپیش ہیں ۔ جسٹس حمید کالونی‘ عرفات کالونی‘ لوہار کالونی‘ نیوناظم آباد‘ یعقوب ٹاؤن‘ بہادر پور سمیت متعدد علاقوں میں سوئی گیس کی فراہمی کی سہولت نہ ہونے کے برابر ہے ۔بیشتر علاقوں میں صبح سویرے ہی گیس کی لوڈشیڈنگ شروع ہو جاتی ہے یا پریشر ختم ہو جاتا ہے ۔ صارفین نے شدید احتجاج کرتے ہوئے ایم ڈی سوئی گیس سے مسئلہ حل کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ حکومتی اعلانات مذاق بن گئے ۔نئے سال 2018کے بھی23روز گزر گئے ۔ بجلی کی لوڈشیڈنگ ختم نہیں ہو سکی ۔ لائن لاسز کے نام پر لوڈشیڈنگ کے ساتھ ساتھ مینٹی نینس کے نام پر الگ کئی کئی گھنٹے فیڈرز بند کئے جا رہے ہیں جس کے باعث صارفین مسلسل اذیت میں مبتلا ہیں ۔ صارفین نے شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت لوڈشیڈنگ کا مکمل خاتمہ کرے ۔دوسری جانب میپکو حکام کے مطابق وزارت توانائی کے احکامات کی روشنی میں لوڈشیڈنگ کے لئے شیڈول کے مطابق فیڈرز پر لائن لاسز اور بجلی چوری کی شرح کے مطابق بجلی کی فراہمی کی جارہی ہے ۔ وزارت توانائی کی ہدایات کے مطابق جن 11KVفیڈرز پر نقصانات کی شرح10فیصد سے کم ہے ان پر لوڈشیڈنگ بالکل ختم کردی گئی ہے ۔ میپکو کے کل1295فیڈرز ہیں ان میں 807فیڈرز ایسے ہیں جن پر10فیصد سے کم نقصان ہے لہذا ان807فیڈرز پرزیرولوڈشیڈنگ کردی گئی ہے اور بلاتعطل بجلی فراہمی جاری ہے ۔10سے20فیصد نقصانات کے حامل372اور 20سے30فیصد نقصانات کے حامل 80فیڈرز پر صرف2گھنٹے کے لئے لوڈمینجمنٹ کی جارہی ہے یعنی مجموعی طورپر 310فیڈرز پر 24گھنٹے میں سے صرف 2گھنٹے بجلی بندکی جارہی ہے ۔30فیصد سے40فیصد نقصانات کے حامل صرف18فیڈرز ہیں جن پر 4گھنٹے کے لئے ، 40سے60فیصد نقصانات کے حامل10فیڈرز ہیں جن پر 6گھنٹے ، 60سے80فیصد نقصانات کے حامل صرف 3فیڈرز ہیں جن پر8گھنٹے اور 80فیصد نقصانات /لائن لاسز والے 5 فیڈرزپر12گھنٹے لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...