نواں کوٹ : آٹھویں کی طالبہ اغوا، پولیس مقدمہ درج نہیں کر رہی : والدین کا الزام

نواں کوٹ : آٹھویں کی طالبہ اغوا، پولیس مقدمہ درج نہیں کر رہی : والدین کا الزام

لاہور(خبرنگار) نواں کوٹ کے علاقہ میں آٹھویں جماعت کی طالبہ کو اغوا کر لیا گیا۔ پولیس نے کمپیوٹرائزڈ چٹ تھما کر والدین کو ٹرخا دیا۔ تفصیلات کے مطابق جھگیاں ناگراکے رہائشی محنت کش ذوالفقار کے مطابق اس کی 12 سالہ بیٹی مقدس سی بلاک سبزہ زار میں واقع سرکاری سکول میں آٹھویں جماعت کی طالبہ ہے۔ دو روز قبل وہ اپنی بیٹی کو سکول چھوڑ کرآیا، سکول سے چھٹی کے بعد اسکی بیٹی گھر نہ پہنچی جس پر وہ تھانہ نواں کوٹ اور بعدمیں تھانہ سبزہ زار گیا تو دونوں تھانوں کی پولیس نے اسے ٹال دیا۔ آخر کار نواں کوٹ پولیس نے اس کی درخواست فرنٹ ڈیسک پر وصول کر کے ایک کمپیوٹرائزڈ چٹ تھما دی مگر پولیس نے تاحال اس کی درخواست پر مقدمہ درج نہ کیا ہے۔ شہری ذوالفقار نے اپنی بیوی کے ہمراہ ’’پاکستان‘‘ کو بتایا کہ اس کی بیٹی کو اغوا کیا گیا ہے ، وہ اپنی بیٹی کی بازیابی کے لئے بار بار تھانے جا رہا ہے مگرپولیس مسلسل اسے ٹال رہی ہے۔ شہری ذوالفقار کا کہنا تھا کہ اس نے اپنے اہلخانہ اور محلہ داروں کے ہمراہ سرکاری سکول کے سامنے احتجاج بھی کیا ، اس کے باوجود پولیس ٹس سے مس نہیں ہوئی۔ شہری نے وزیراعلیٰ اور آئی جی پنجاب سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ اس حوالے سے ڈی ایس پی نواں کوٹ کامران زمان کا کہنا ہے کہ شہری ذوالفقار کی درخواست پر مقدمہ درج کیا جا رہا ہے اور طالبہ کی بازیابی کے لئے مختلف پہلوؤں پر کارروائی بھی کی جا رہی ہے۔

B

مزید : علاقائی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...