ہسپتالوں کا دورہ ضرور کریں مگر اپنے گھر کی خبر بھی لیں : نواز شریف

ہسپتالوں کا دورہ ضرور کریں مگر اپنے گھر کی خبر بھی لیں : نواز شریف

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،نیوز ایجنسیاں ) سابق وزیراعظم نوازشریف کا کہنا ہے ہمارے خلاف ایک کے بعد دوسرا ریفرنس دائر کردیا جاتا ہے، کسی میں جرات نہیں کہ وہ ڈکٹیٹر کو وطن واپس لے آئے، ہسپتالوں کا دورہ کرنیوالے وہاں ضرور جائیں مگر اپنے گھر کی خبر بھی لیں،عدلیہ میں ریفارمز کی ضرورت ہے ۔نیب کے پاس کوئی شواہد نہیں، عدالتی فیصلے سے ملکی ترقی رک گئی،فیس سیونگ کیلئے احتساب عدالت سے سزا دلوائی جا رہی ہے، واٹس ایپ کال سے لیکر اب تک انصاف نہیں کیا جا رہا عوام نے سپریم کورٹ کے فیصلے کو ابھی تک قبول نہیں کیا،کوئی کرپشن ، سرکاری عہدے کا ناجائز استعمال یا اپنے منصب کا غلط استعمال نہیں کیا۔ نیب کورٹ رپورٹرز ایسوسی ایشن اور پنجاب ہاؤس میں صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ جو ضمنی ریفرنس لائے جارہے ہیں ان کا مقصد کیا ہے، معاملہ جب ختم ہونے کی طرف جارہا ہے تو اسے کیوں لٹکایا جا رہا ہے، نیب والے قومی خزانے کو خرچ کرکے باہر جاتے ہیں اور سیر سپاٹا کرکے واپس آ جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا جب ثبو ت نہیں ملتا تو معاملے کو ختم کردینا چاہیئے، ایک ریفرنس کے بعد دوسرا ریفرنس دائر کر دیا جاتا ہے، آئندہ ریفرنس میرے اور شہباز شریف کیخلاف دائر کئے جا رہے ہیں، سڑک بنانے پر شاباش ملنی چاہیے ، یہ پوچھتے ہیں سٹرک کیوں بنائی۔نوازشریف نے کہا ساری قوم جانتی ہے کہ یہ سب کیا ہو رہا ہے، عوام نے سپریم کورٹ کے فیصلے کو ابھی تک قبول نہیں کیا، پوری قوم اس فیصلے کو مسترد کر چکی ہے،پہلے دن سے پتہ تھا کہ اس کیس میں کچھ نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کوئی کرپشن ، سرکاری عہدے کا ناجائز استعمال یا اپنے منصب کا غلط استعمال نہیں کیا،آئی ایم ایف نے ڈیووس میں کل رپورٹ پیش کی کہ پاکستان معاشی ہمسایہ ملکوں سے آگے ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جب اقتدار میں آیا تو سٹاک ایکسچینج 13ہزار پوائنٹس پر تھی اور جب مجھے نکالاگیا تو اسٹاک ایکسچینج 53 ہزار پوائنٹس پر تھی، اب سٹاک ایکسچینج 40ہزار سے نیچے چلی گئی ہے۔نوازشریف نے کہا کہ اسحق خان کے دور سے لوگوں کی خواہش ہے کہ دو بھائیوں میں تقسیم ہو لیکن بھائیوں میں آج تک تقسیم ہوئی نہ ہوگی، ہمارے آپس میں تنازعات کی خبریں پھیلائی جاتی رہی ہیں۔سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہماری جماعت کے بیانیے سے پوری پارٹی متفق اور یکسو ہے، ہماری پارٹی مکمل طور پر متحد ہے۔ نوازشریف نے کہا کہ انتخابات ہوں گے، اس میں مجھے کوئی شک نہیں۔سابق وزیراعظم نے چیف جسٹس پاکستان کا نام لیے بغیر ان کے ہسپتالوں کے دورے پر تنقید کی۔نوازشریف نے کہا کہ ہسپتالوں کا دورہ کرنیوالے وہاں ضرور جائیں مگر اپنے گھر کی خبر بھی لیں، اس وقت عدالتوں میں بہت سارے مقدمات زیر التوا ہیں۔مسلم لیگ (ن) کے صدر کا کہنا تھا کہ میرے خلاف مقدمات پر سپروائزر بٹھادیا گیا ہے، عدالتوں میں زیر التوامقدمات کے بارے میں الگ سے بات کروں گا، میں سمجھتا ہوں کہ سارانظام اوور ہال ہونا چاہیے۔چیئرمین نیب کی تعیناتی سے متعلق سوال پر نوازشریف نے تبصرہ کرنے سے انکار کردیا۔یاد رہے کہ چیف جسٹس پاکستان نے لاہور کے میو ہسپتال کا دورہ کیا تھا جس کے بعد انہوں نے ایک کیس کے دوران ریمارکس بھی دیئے تھے کہ ان کے ہسپتال کے دورے پر اعتراضات کیے گئے۔

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...