حکومت نے1500اکلاس خاندانوں کامستقبل تاریک کردیا،سرداررشید

حکومت نے1500اکلاس خاندانوں کامستقبل تاریک کردیا،سرداررشید

مظفرآباد(بیورورپورٹ)اکلاس لیبر ایمپلائز یونین کے مرکزی چیئرمین سردار رشید سرور نے کہاہے کہ حکومت نے اکلاس سے مینڈیٹ چھین کر15 سوخاندانوں کامستقبل تاریک کردیا۔گولڈن ہینڈ شیک کی حسرت لیکر درجنوں ملازمین دنیا فانی سے کوچ کرگئے ، اکلاس کے ذریعے حکومت نے نیلم کے جنگلات کابڑا نقصان کیا۔ اور پھر نیلم کے شہریوں کامستقبل بھی محفوظ نہ ہوسکا،محکمہ جنگلات کاکام جنگلات کی حفاظت کرنا تھی اب جنگلات کٹائی پرتوجہ مرکوز ہے ۔حکومت کئی سال سے کبھی ملازمین کو نارمل میزانیہ پر لانے اور کبھی گولڈن ہینڈ شیک کے تحت ریٹائرڈ کرنے کاوعدہ کررہی ہے، تین ماہ سے ملازمین کو تنخواہیں اور پنشنرز کو پنشن تک نہیں ملی ، اہل وعیال کے سمیت ملازمین دھرنے میں بیٹھے ہیں جو گڈگورننس کیلئے سوالیہ نشان ہے ۔ آزادکشمیر کے 504 ملازمین میں 50 ملازمین تحصیل شاردہ سے آج تیسرے روز سے دھرنے میں بیٹھے ہیں۔ اکلاس ملازمین کیساتھ حکومت نے روز ازل سے ہی سوتیلا سلوک روارکھا ، جس جس سکیل میں ملازمین بھرتی ہوئے آج تیس تیس سال ہوگئے اپ گریڈیشن تک نہیں ہوئی ، ہمارا آج کاجاری دھرنا فیصلہ کن دھرنا ہوہے ،ضرورت پڑی اسلام آباد کی جانب لانگ مارچ کرینگے، ان خیالات کااظہار اکلاس لیبر ایمپلائز یونین کے مرکزی چیئرمین سردار رشید سرور نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ گڈ گورننس کیلئے سوالیہ نشان ہے کہ اسوقت آزادکشمیر بھر سے 15 سو حاضر وپنشن ملازمین بچوں سمیت سڑکوں پر بھوک ہڑتال کیئے ہوئے ہیں۔ اکلاس اپنے اثاثے رکھنے کے باوجوملازمین کو تنخواہیں ، پنشن دینے سے قاصر ہے ، اکلاس کے مینڈیٹ پر محکمہ جنگلات نے قبضہ کرکے لکڑی نکاسی کاسلسلہ جاری رکھاہواہے ۔ جو اکلاس کی تباہی کا باعث بنا ۔ انہو ں نے کہاکہ حکومت نے ہمارے ساتھ مختلف اوقات میں وعدے کیئے تھے کہ اکلاس ملازمین میں سے 25 سالہ سروس کے حامل ملازمین کو ریٹائرڈ کردیاجائیگا۔ دیگر ملازمین کو نارمل میزانیہ پرلاکر محکمہ کو فعال کرینگے اور آزادکشمیراکلاس مینڈیٹ کے مطابق آزادکشمیر سے لکڑ کی نکاسی اور مارکیٹنگ کی جائیگی ۔ بعدازاں آپشن کے طور پر گولڈن ہینڈ شیک متعارف کرایاگیالیکن آج تک اس پر کوئی عملدرآمد نہیں ہوا۔ حکومت مسلسل اپنے ہی شہریوں کو نظرانداز کررہی ہے ،وزیراعظم آزادکشمیر راجہ فاروق حیدراکلاس ملازمین کے مسائل حل کرناتو چاہتے ہیں لیکن بیورو کریسی رکاوٹ ہے ۔ اب کی بار مظفرآباد میں جاری دھرنا کسی صورت ختم نہیں کرینگے جبکہ تک ہمارے معاملات یکسو نہیں ہوتے انہوں نے کہاکہ انہوں نے کہاکہ باقی محکمہ جات میں بھرتی ہونے پانچ اور دس سال کے اند ر اندر پرومشن ہوجاتی ہے لیکن بدقسمتی سے اس محکمہ میں جو ملازمین جس جس سکیل پر بھرتی ہوئے ہیں اسی سے ریٹائرڈ ہوئے لیکن آج تک حاضر ملازمین کی پرموشن نہ ہونا ظلم ہے ۔ انہوں نے کہاکہ نیلم ویلی کے جنگلات نیلم کے ملازمین کامستقبل بھی محفوظ نہ کرسکے ۔ انہوں نے وزیراعظم آزادکشمیر ، سپیکر اسمبلی، وزیرجنگلات ، اکلاس، چیف سیکرٹری ، معاملہ کاسنجیدگی سے نوٹس لیں بصورت دیگر اسلام آباد کی جانب لانگ مارچ کرینگے جس کی تمام ترزمہ داری حکومت پر ہوگی ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...