پاکستان میں ایک کروڑ 21لاکھ خواتین ووٹرز نہیں ہیں،ڈسٹرکٹ الیکشن کمشنر جہلم

پاکستان میں ایک کروڑ 21لاکھ خواتین ووٹرز نہیں ہیں،ڈسٹرکٹ الیکشن کمشنر جہلم

جہلم(نامہ نگار )ڈسٹرکٹ الیکشن کمشنر خورشید عالم نے صحافیوں کو فریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ پاکستان میں ایک کروڑ 21لاکھ خواتین ووٹرز نہیں ہیں آئندہ الیکشن میں 9کروڑ 70لاکھ سے زائد ووٹرز اپنا حق رائے دہی استعمال کریں گے جن میں 5کروڑ 47لاکھ سے زائد مرد اور 4کروڑ 24لاکھ سے زائد خواتین ووٹرز ہونگی بیلٹ پیپرز صرف سرکاری پرنٹنگ پریس سے چھپے گے بیلٹ پیپر ز واٹر مارک والے ہونگے دوبارہ گنتی کے لیے پانچ فیصد یا دس ہزار سے کم ووٹ کا فرق والے امیدواروں کی درخواست پر دوبارہ گنتی کی جائے گی پورے ملک میں آٹھ سے نو لاکھ افراد کا عملہ الیکشن کے لیے ٹریننگ کرے گا جہلم کے لیے دس ہزار کا عملہ تعینات ہو گا پولنگ اسٹیشن کا فاصلہ دو کلومیٹر سے کم کر کے ایک کلومیٹر کر دیا گیا ہے پہلے ایک پولنگ اسٹیشن پردو ہزار سے زائد ووٹرز ووٹ ڈالتے تھے اب ایک پولنگ اسٹیشن پر ایک ہزار ووٹرز ووٹ ڈالے گے قومی اسمبلی کے حلقے تقریبا 7لاکھ80ہزار ووٹرز پر مشتمل ہونگے جبکہ صوبائی اسمبلیوں کے حلقے تقریبا3لاکھ80ہزارووٹرز پر بنائے جائے گے اس حساب سے جہلم کی صوبائی اسمبلی کی سیٹیں چار سے کم ہو کر تین رہ جائے گی لیکن ضلعی حدود کو مدنظر رکھتے ہوئے قومی اسمبلی کے حلقے کم ووٹرز ہونے کے باوجود دوبرقرار رکھنے چانس موجود ہیں ڈسٹرکٹ الیکشن کمشنر خورشید عالم نے مزید کہا ہے کہ صوبائی اسمبلی اور سینٹ کے الیکشن میں حصہ لینے والے امیدوار 20ہزار روپے سکیورٹی جمع کروائے گے جبکہ قومی اسمبلی کے الیکشن میں حصہ لینے والے امیدواروں سے 30ہزار روپے سکیورٹی وصول کی جائے گی اور 1/8کی بجائے اب 1/4سے کم ووٹ لینے والوں کی سکیورٹی ضبط کر لی جائے گی یعنی کہ سکیورٹی واپس لینے کے لیے ایک چوتھائی ووٹ لینے لازم ہونگے صوبائی اسمبلیوں کے امیدوار اب دس لاکھ کی بجائے بیس لاکھ روپے الیکشن میں خرچ کر سکے گے اور قومی اسمبلی کے امیدواروں کو 15لاکھ کی بجائے 40لاکھ روپے الیکشن میں خرچ کرنے کی اجازت ہو گی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرنے والوں کی مانیٹرنگ کرنے کے لیے کمیٹی بنائی جائے گی جو مانیٹرنگ کرے گی اور موقع پر جرمانے اور میدواروں کو نااہل کر سکے گی ڈسٹرکٹ الیکشن کمشنر نے مذید بتایا کہ ضلع جہلم کے آٹھ لاکھ 90ہزار ووٹرز ہیں جن میں 4لاکھ 72ہزارمرد اور 4لاکھ 18ہزار خواتین ووٹرز ہیں اسکے علاوہ 60ہزار ایسی خواتین ہیں جو اہل ہیں لیکن ان کی ووٹ نہیں ہے اس کے لیے نادرہ اور این جی اوز کی مدد سے انہیں ووٹرز بنائے گے جبکہ 55ہزار ووٹرز کی تصدیق ہونا باقی ہے جن کی عمریں 18سال سے زائد ہیں وہ ہم سے رابطہ کرکے اپنی ووٹ بنوا سکتے ہیں کیونکہ اسمبلیوں کی مدت ختم ہونے سے ایک ماہ پہلے تک اگر کوئی اپنی ووٹ ایک جگہ سے دوسر ی جگہ پر منتقل کرنا چاہتے ہیں یا کسی کی ووٹ غلطی سے کسی دوسری جگہ بن گئی ہے تو وہ درست کروا سکتا ہے عوامی آگائی کے لیے ہمارا 445افراد کا عملہ کام کر رہا ہے 165جگہوں پر ڈسپلے سنٹر بنائے جائے گے ضلع جہلم کے 1132سے 1224بلاک بنا دیئے گئے ہیں عوام کو چاہے کہ الیکشن کے دن کا انتظار نہ کریں اس سے پہلے پہلے ایک بار اپنی ووٹ ضرور چیک کرلیں ہم نے اپنے دفتر میں جدید کمپیوٹرائز لیب تیار کی ہے جس کی مدد سے درخواست دہندہ کی ووٹ پانچ منٹ میں ایک جگہ سے دوسری جگہ منتقل ہو جائے گی تحصیل جہلم کی آبادی 4لاکھ 45ہزار ،تحصیل دینہ کی آبادی2لاکھ38ہزار ،تحصیل سوہاوہ کی آبادی2لاکھ 1ہزار اور تحصیل پنڈدادنخان کی آبادی3لاکھ36ہزار افراد پر مشتمل ہے

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر