راﺅ انوار کی فرار کی کوشش ناکام کیسے ہوئی ؟

راﺅ انوار کی فرار کی کوشش ناکام کیسے ہوئی ؟
راﺅ انوار کی فرار کی کوشش ناکام کیسے ہوئی ؟

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک)کراچی کے معطل ایس ایس پی راﺅ انوار رات کو ایک بج کر چالیس منٹ پر بینظیر انٹر نیشنل ایئرپورٹ اسلام آباد پہنچے جہاں سے وہ ایمریٹس ایئر لائن کی پرواز EK 615 کے ذریعے دبئی فرار ہونا چا ہتے تھے۔

روزنامہ دنیا کے مطابق وہ بورڈنگ کارڈ حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئے جس کے بعد وہ راول لاﺅنج پہنچے جہاں این او سی سمیت ان کا پاسپورٹ اور ویزا چیک کیا گیا ان کی کسی دستاویز پر راﺅ انوار نھیں بلکہ انوار احمد خان لکھا ہوا تھا لیکن امیگریشن افسر تیمور نے انھیں پہچان لیا اور این او سی پر بلا دستخط چیف سیکرٹری کا نام دیکھ کر این او سی پر شک ظاہر کیا انھو ں نے اپنے ڈپٹی ڈائریکٹر ڈاکٹر واجد کو اطلاع دی، جنھوں نے ڈائریکٹر امیگریشن شکیل درانی کو نیند سے جگایا اور معاملے پر تفصیلی بات چیت کی، امیگریشن حکام اس نتیجے پر پہنچے کہ این او سی لیٹر چیف سیکرٹری کے بجائے سیکرٹری داخلہ کی جانب سے چاہیے تھا ۔

 دوسرا این اوسی پر چیف سیکرٹری کے دستخط بھی نہیں ، تیسرے راﺅ انوار ہائی پروفائل کیس میں مبینہ طور پر مطلوب ہیں یہ تمام معاملات دیکھ کر انھیں واپس بھیج دیا گیا حکام کا کہنا ہے کہ راﺅ انوار کا نام ای سی ایل میں تھا نہ ہی کسی عدالت نے ان کے خلاف وارنٹ گرفتاری جاری کئے تھے اس لئے انھیں گرفتار کرنے کے بجائے جعلی این او سی کی بنیاد پر دبئی جانے سے روک دیا گیا۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد