بد نام زمانہ پولیس افسر راو انوار کا اصل نام کیاہے؟جان کر آپ بھی حیران رہ جائیں گے

بد نام زمانہ پولیس افسر راو انوار کا اصل نام کیاہے؟جان کر آپ بھی حیران رہ ...

اسلام آباد( ویب ڈیسک) کراچی کے علاقے ملیر کے ایس ایس پی انوار احمد خان تقریباً دس سال سے وہاں تعینات تھے پی پی پی کے دور میں انہیں ایس ایس پی لگایا گیا گورنر سندھ سے بھی زیادہ عرصے سے ملیر کراچی کے ایس پی رہے ان کا اقامہ نمبر 120466191 ، 9 اکتوبر 2017 کو یو اے ای حکومت نے جاری کیا اس کی معیاد 8 اکتوبر 2018 تک ہے ۔

روزنامہ جنگ کی رپورٹ کے مطابق انوار احمد یکم جنوری 1959 کو کراچی میں پیدا ہوئے اور جنوری 2018 میں ہی قانون کی گرفت میں آگئے ان کا ستارہ کیپری کان ہے وہ جس پاسپورٹ پر سفر کر رہے تھے وہ 27 مئی 2014 کو جاری ہوا اور 26 مئی 2019 تک اس پر سفر کرسکتے تھے۔ انوار احمد خان ولد نثار محمد خان کا کمپیوٹرائزڈ شناختی کارڈ نمبر 61101-0415225-9 ہے پاسپورٹ نمبر ایم یو۔ 4112252 تھا ان کی اہلیہ کا نام ثمینہ انوار احمد خان ہے اقامہ کی تاریخ اجراء9 اکتوبر 2017 ہے اور 8 اکتوبر 2018 کو زائدالمعیاد ہوگا۔

اسلام آباد سے دبئی بزنس کلاس میں حلیہ بدل کر انوار احمد جارہے تھے وہ جنوری میں پیدا ہوئے اور جنوری میں ہی ایف آئی اے نے ان کے ملک سے غیر ملکی پرواز سے فرار ہونے کی کوشش ناکام بنا دی اور کل ہی ان کا نام ای سی ایل پر ڈال دیا۔ راﺅ انوار 23 جنوری کی علی الصبح ایمریٹس ایئرلائن کی پرواز ای کے ۔0615 کے ذریعے دبئی کیلئے محو پرواز ہونے والے تھے مگر ایف آئی اے امیگریشن کے دیانتدار افسر نے حلیہ بدل کر ملک سے باہر جانے کی کوشش ناکام بنا دی۔ ایمریٹس ایئرلائن کی پرواز ای کے۔0615 کو 23 جنوری کی صبح ایک بجے دبئی روانہ ہونا تھی مگر راﺅ انوار احمد خان ایس ایس پی کے ایشو کی وجہ سے دو بجکر بیس منٹ پر روانہ ہوئی اس طرح 80 منٹ ای کے۔0615 لیٹ کی گئی۔

انوار احمد خان کے پاسپورٹ پر راﺅ نہیں لکھا ہوا راﺅ اس کا سر نام نہیں ہے سر نام خان ہے اس کا نام راﺅ نہیں ہے ای سی ایل میں ان کے نام کی شمولیت راﺅ انوار احمد خان کے ساتھ کی گئی ہے جبکہ اس کے پاسپورٹ پر راﺅ انوار نہیں لکھا ہوا بلکہ خان۔ انوار احمد لکھا ہوا ہے اس بنا پر وہ ملک سے فرار ہوسکتا ہے ولدیت میں بھی انوار احمد خان ان کے والد کا نام نثار احمد خان ہے اس کے شروع میں بھی راﺅ درج نہیں ہے۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...