چین، ایران نے پاکستان سے گائے کے گوشت کی درآمد پر پابندی عائد کردی

چین، ایران نے پاکستان سے گائے کے گوشت کی درآمد پر پابندی عائد کردی

اسلام آباد (ویب ڈیسک) پاکستان میں غیر معیاری، مضر صحت اور ممنوعہ جانوروںکے گوشت کی فروخت کے معاملے کے بعد ایران اور چین نے پاکستان سے گوشت کی درآمد پر پابندی عائد کردی جبکہ افغانستان کے ساتھ گوشت کی تجارت میں بھی نمایاں کمی ہوئی۔

روزنامہ 29 نیوز کے مطابق مالی سال 2016-17ءکے دوران ایران اور چین نے پاکستان سے ایک ڈالر کی بھی گائے کے گوشت کی درآمد نہیں کی جبکہ مالی سال 2013-14ءکے دوران ایران نے پاکستان سے 69 لاکھ 48ہزار ڈالر کا 21 لاکھ 94 ہزار 719 کلوگرام گائے کا گوشت درآمد کیا۔ چین موجودہ دور حکومت میں 2000 ڈالر مالیت کا صرف 600 کلو گائے کا گوشت درآمد کیا۔ موجودہ دور حکومت میں پاکستان نے چین، افغانستان اور ایران کو 63 کروڑ 82 لاکھ 66ہزار ڈالر کا 18 کروڑ 80 لاکھ 2ہزار 6کلو گائے کا گوشت برآمد کیا جس میں سے تین لاکھ 53 ہزار ڈالر کا گائے کا گوشت افغانستان، دو ہزار ڈالر چین جبکہ ایران کو 69 لاکھ 78ہزار ڈالر کا گائے کا گوشت برآمد کیا گیا تاہم دو مالی سال سے ایران نے پاکستان کے ساتھ گائے کے گوشت کی درآمد پر پابندی عائد کررکھی ہے۔

ان ساڑھے چار برس میں افغانستان، چین اور ایران کی پاکستان کے ساتھ بکرے کے گوشت کی درآمد میں بھی کمی دیکھنے میں آئی۔ پاکستان نے افغانستان، چین اور ایران کو 20 کروڑ 41 لاکھ 34 ہزار ڈالر مالیت کا 4 کروڑ 78لاکھ 18ہزار 187 کلو بکرے کا گوشت برآمد کیا۔ چین نے صرف 6ہزار ڈالر کا 1ہزار 420 کلو گرام جبکہ ایران نے 9لاکھ 84 ہزار ڈالر کا ایک لاکھ 13 ہزار 573 کلوبکرے کا گوشت درآمد کیا تاہم 2 مالی سالوں سے ایران نے پاکستان سے بکرے کے گوشت کی درآمد پر پابندی عائد کررکھی ہے۔ ساڑھے 4سال کے دوران افغانستان نے 12 لاکھ 38ہزار ڈالر کا 2 لاکھ 8ہزار 607 کلوگرام بکرے کا گوشت درآمد کیا۔

مزید : بزنس /علاقائی /اسلام آباد

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...