’میں نے 49 جسم فروش لڑکیوں کو قتل کرکے ان کا قیمہ بنادیا، لیکن افسوس صرف اس بات کا ہے کہ میں۔۔۔‘ تاریخ کے سفاک ترین قاتل کا وہ انکشاف کہ جان کر ہر شخص کانپ اُٹھے

’میں نے 49 جسم فروش لڑکیوں کو قتل کرکے ان کا قیمہ بنادیا، لیکن افسوس صرف اس ...
’میں نے 49 جسم فروش لڑکیوں کو قتل کرکے ان کا قیمہ بنادیا، لیکن افسوس صرف اس بات کا ہے کہ میں۔۔۔‘ تاریخ کے سفاک ترین قاتل کا وہ انکشاف کہ جان کر ہر شخص کانپ اُٹھے

  

اوٹاوا(مانیٹرنگ ڈیسک) کینیڈا میں ایک سیریل کلر کو 49جسم فروش خواتین کے قتل کے جرم میں قید کی سزا سنا کر جیل بھیجا گیا جہاں اس نے اپنے سیل میں موجود دوسرے قیدی کے سامنے اپنی سفاکیت کے ایسے انکشافات کر دیئے کہ سن کر ہرکوئی کانپ اٹھے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق 68سالہ رابرٹ پکٹن نامی اس شخص کو 2007ءمیں 26جسم فروش خواتین کے قتل کے جرم میں جیل بھیجا گیا تھا جہاں اس نے 2002ءمیں اپنے ساتھی قیدی کو بتایا کہ اس نے دراصل 49خواتین کو قتل کیا اور وہ انہیں قتل کرنے کے بعد ان کاقیمہ بنا دیا کرتا تھا۔ اس نے ساتھی قیدی کو بتایا کہ ”میں خواتین کے قتل کی ففٹی کرنا چاہتا تھا۔ 49ہو گئیں تھیں اور صرف ایک باقی رہ گئی تھی کہ میں پکڑا گیا۔ مجھے آج تک اس کا بہت پچھتاوا ہے۔“

رپورٹ کے مطابق رابرٹ کا ساتھی قیدی گزشتہ دنوں رہا ہو کر باہر آیا تو اس نے اس کی سفاکیت کا قصہ دنیا کو سنایا۔ رابرٹ کینیڈین صوبے برٹش کولمبیا میں سوروں کے فارم کا مالک تھا۔ اس نے زیادہ تر مقتول خواتین کو شراب اور دیگر منشیات کا لالچ دے کر اپنے اسی فارم ہاﺅس پر بلایا اور وہیں قتل کرکے ان کا قیمہ بنا کر دفن کردیا۔ پولیس سالوں تک اس قاتل کی تلاش میں سرگرداں رہی ۔ بالآخر اسے اس کے فارم ہاﺅس سے لاپتہ ہونے والی خواتین کی کچھ اشیاءملیں جس پر وہاں تحقیقات کی گئیں تو وہاں سے 26خواتین کے ڈی این اے بھی مل گئے جس پر اسے گرفتار کرکے عدالت میں پیش کر دیا گیا۔پولیس نے جیل کے سی سی ٹی وی کیمرے کے ذریعے رابرٹ کی اعترافی ویڈیو بھی حاصل کر لی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس