مصنوعی مہنگائی‘حکومتی بدنامی کا باعث بننے والوں کا معاف نہیں کیا جائے گا‘ طاہر یوسف

مصنوعی مہنگائی‘حکومتی بدنامی کا باعث بننے والوں کا معاف نہیں کیا جائے گا‘ ...

  



رحیم یارخان(نمائندہ پاکستان)سیکرٹری آثار قدیمہ پنجاب طاہر یوسف نے کہا ہے کہ مصنوعی مہنگائی کے خاتمہ کیلئے حکومت پنجاب(بقیہ نمبر25صفحہ12پر)

کسی بھی حد تک جائے گی، حکومت کی بدنامی کا باعث بننے والے عناصر کو کسی صورت معاف نہیں کیا جائے گا۔صوبہ بھر میں آٹا سمیت اشیاء روز مرہ کی کسی اقسام کی کوئی قلت نہیں، ضلعی انتظامیہ چینی و آٹا کے نرخوں کو حکومتی ہدایات کے مطابق فروخت کرانے کے لئے سخت اقدامات اٹھائے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈپٹی کمشنر کمیٹی روم میں منعقدہ ضلع بھر کے پرائس کنٹرول مجسٹریٹس کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(ریونیو)ڈاکٹر جہانزبیب حسین لابر، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(جنرل)شیخ محمد طاہر، اسسٹنٹ کمشنرز چوہدری اعتزاز انجم، ملک فاروق احمد، ارشد وٹو، عامر افتخار، ایس این اے جام محمد نعیم،سمیت دیگر موجود تھے۔سیکرٹری پنجاب طاہر یوسف نے کہا کہ اشیاء ضروریہ کی فروخت میں جائز منافع لینے والوں کی حوصلہ افزائی جبکہ عوام کی جیبوں میں ڈاکہ ڈالنے والوں کو پابند سلاسل کریں۔وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار اور چیف سیکرٹری پنجاب روزانہ کی بنیاد پر ضلعی انتظامیہ کی کارکردگی مانیٹر کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ مصنوعی مہنگائی یا غزائی قلت کسی صورت برداشت نہیں کی جائے گی انتظامیہ ذخیرہ اندوزوں کے خلاف بلاتفریق کارروائی کرے۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(ریونیو)ڈاکٹر جہانزیب حسین لابر نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ ضلع بھر میں آٹا20کلو گرام تھلہ805،10کلو گرام402روپے میں،چینی70روپے کلو فروخت ہو رہی ہے جبکہ دیگر روز مرہ اشیاء کے نرخ بھی دیگر اضلاع کو دیکھتے ہوئے مقرر کئے گئے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ ضلع بھر میں 44پرائس کنٹرول مجسٹریٹس گرانفروشوں کے خلاف متحرک ہیں۔ضلع بھر میں یکم اکتوبر2019سے تاحال پرائس کنٹرول مجسٹریٹس نے 41ہزار169انسپکشن کے دوران 5ہزار154مارکیٹس کا دورہ کرتے ہوئے خلاف ورزی کے مرتکب3ہزار907 افراد کو67لاکھ55ہزار400جرمانہ، 95مقدمات اور59افراد کو جیل بھجوایا۔قیمت ایپ پر شہریوں کی جانب سے 1182شکایات موصول ہوئی جس میں سے1175کو حل کر دیا گیا۔ضلع بھر میں آٹا کے915فکسڈ اور 33موبائل سیل پوائنٹس موجود ہیں

طاہر یوسف

مزید : ملتان صفحہ آخر