سانحہ تیز گام‘ لاپتہ 8افراد کا تاحال سراغ نہ مل سکا

سانحہ تیز گام‘ لاپتہ 8افراد کا تاحال سراغ نہ مل سکا

  



لیاقت پور(نمائندہ پاکستان) تیز گام آتشزدگی سانحہ میں لاپتہ ہونے والے میر پور خاص کے 8 افراد کا ابھی تک کوئی سراغ نہیں مل سکا۔ ورثاء اپنے پیاروں کی تلاش کر کر کے ہلکان ہو گئے۔ اعلی حکام سے انکی تلاش میں مدد کی اپیل۔ تفصیلات کے مطابق تقریبا 3 ماہ قبل کراچی سے لاہور جانے والی تیز گام کے تین ڈبوں میں تنواری ریلوے اسٹیشن کے قریب آگ لگنے سے کم وبیش دو سو کے مسافر جھلس کر جاں بحق ہو گئے تھے جبکہ درجنوں افراد شدید زخمی ہوئے جنہیں فوری علاج۔کے لئے رحیم یار خان۔بہاولپور(بقیہ نمبر46صفحہ12پر)

اور ملتان کے ہسپتالوں میں ریفر کر دیا گیا تھا جبکہ ناقابل شناخت ڈیڈ باڈیز کو ڈی۔این۔اے ٹیسٹ کے لیے شیخ زید ہسپتال رحیم یار خان لے جایا گیا جہاں ڈی۔این۔اے ٹسٹ کے بعد تمام ڈیڈ باڈیز ورثاء کے حوالے کر دیا گیا ہے مگر اس ڈبہ میں موجود 8 افراد سیف الرحمان۔محمد جاوید۔محمد اعجاز۔جان محمد۔ محمد اقبال۔اورنگزیب یاسر علی اور محمد عادل جن کا تعلق میر پور خاص سے ہے کا ابھی تک کوئی سراغ نہیں مل سکا۔ ورثاء اپنے پیاروں کو تلاش کر کر کے ہلکان ہو گئے ہیں ان کے متعدد ورثاء محمد شکیب۔مولانا محمد اعظم۔نوراسلام اور احسان اللہ نے لیاقت پور آ کر میڈیا کو بتایا کہ لاپتہ ہونے والے افراد کی تلاش میں کوئی سرکاری ادارہ ہماری راہنمائی نہیں کر رہا ہر جگہ ہر طریقے سے اپنے ان پیاروں کو تلاش کر چکے ہیں مگر ناکام ہو گئے ہیں انہوں نے وفاقی حکومت۔محکمہ ریلوے۔اور پنجاب حکومت سے ان لاپتہ افراد کی تلاش میں مدد اور اپنے وسائل بروئے کار لائے گا مطالبہ کیا ہے

تیز گام

مزید : ملتان صفحہ آخر