پولیووائرس کا خاتمہ اولین ترجیح ہے، سعادت علی

پولیووائرس کا خاتمہ اولین ترجیح ہے، سعادت علی

  



تیمرگرہ (بیورورپورٹ) پاکستان کو پولیو فری ملک بنانا تمام طبقات کی مشترذمہ داری ہے ضلع باجوڑ میں پولیو کیس سا منے آنا ضلع دیرلوئر کے لئے خطرے کی گھنٹی ہے پو لیو ٹیموں کوہر قیمت پر تحفظ فراہم کرینگے لو ئر دیر میں 17 فروری سے 20 فروری تک سہ روزہ پولیو مہم کے دوران 3 لاکھ سے زائد پانچ سال سے کم عمر کے بچوں کو پو لیو کے قطرے دیے جا ئنگے ان خیا لات کا اظہار ڈپٹی کمشنر لوئر دیر سعادت حسن، ڈی ایچ او لوئر دیر ڈاکٹر شوکت علی، میجرزاہد انور، ڈاکٹرمحبوب الرحمان، ڈاکٹر ارشاد روغانی، صحا فی عبد اللہ مدنی،و دیگر نے محکمہ صحت لوئر دیر کے زیر اہتمام ڈسٹرکٹ کونسل ہال تیمرگرہ میں عوام میں پولیو قطرے اگاہی مہم کے حوالے سے اوپن فورم سے خطاب کرتے ہوئے کیا فورم میں ایپکا کے صوبائی صدر محمد شاعر تاجک، ایپکا لوئر دیر کے جنرل سیکرٹری سلیم خان، انجمن تاجران تیمرگرہ کے صدر حاجی انوار الدین، مولانا محمد نبی شاہ، سابق ضلعی کونسلرز، عمائدین علاقہ،علماء کرام، اور مختلف محکموں کے اہلکاران نے کثیر تعداد میں شرکت کی مقررین نے کہا کہ پولیو ایک خطرناک وا ئرس ہے جس سے بچے اور بڑے معزور ہوکر معا شرہ پر عمر بھر کے لئے بوجھ بن جاتے ہیں انھوں نے کہا کہ پولیو قطرے حرام ہونے کا کسی کے پاس کوئی ثبوت اور دلیل نہیں اور یہ قطرے ہر لحاظ سے مضر اجزاء سے پاک ہے جس پرجید علماء کرام کے فتوے موجود ہیں انھوں نے کہا کہ گزشتہ سال پشاور میں پولیو قطروں کے خلاف منفی پرو پگنڈا کرکے عوام کو گمرا ہ کیا گیا جس سے پولیو مہم کئی ماہ تک موخر کرنا پڑامقررین نے کہا کہ اگر چہ لوئر دیر 2006 سے پولیو فری ہے تاہم ہمسایہ ضلع با جوڑ میں پولیس کیس آنے سے ضلع دیر کے لئے خطرے کی گھنٹی ہے انھوں نے عوام پر زور دیا کہ وہ اپنے بچوں سمیت گرد وپیش پانچ سال سے کم بچوں کو پولیو قطرے پھیلانے کے لئے اپنا کردار ادا کریں ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ پولیو کے حوالے سے وہ جلد علماء کرام کے لئے کنونشن منعقد کریں گے انھوں نے عوام پر زور دیا کہ وہ منفی پر و پگنڈا کے بجائے پولیو ٹیموں سے تعاون کرکے اپنے بچوں کو انسداد پولیو قطرے ضرور پھیلائے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر