بنوں ٹاؤن شپ کے مکینوں کا مطالبات کے حصول کیلئے احتجاجی مظاہرہ

بنوں ٹاؤن شپ کے مکینوں کا مطالبات کے حصول کیلئے احتجاجی مظاہرہ

  



بنوں (بیورورپورٹ)ٹاؤن شپ کے مکینوں نے پراجیکٹ ڈائریکٹر بنوں ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے خلاف دفتر کے سامنے دوسرے دن بھی احتجاجی دھرنا دیا اور پی ڈی کے تبادلے تک دھرنا جاری رکھنے اور کچرہ پی ڈی دفتر کے سامنے پھینکنے کا اعلان کردیا دھرنے کے شرکاء نے دفتر کے سامنے ٹینٹ اور بینرز لگادیئے اس موقع پر میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت اور دھرنے کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے حضرت جمال خان،منیر احمد،مشتاق اور دیگر مقررین نے کہا کہ ٹاؤن شپ میں کسی قسم کی سہولیات نہیں ہیں جبکہ مکنیوں سے مختلف ٹیکس وصول کئے جاتے ہیں ٹاؤن شپ کی صفائی اور دیگر کاموں کیلئے 135سے زائد ملازمین بھرتی ہوئے ہیں جنہیں تنخواہوں کی مد میں ایک کروڑ 20لاکھ سے زائد دیئے جاتے ہیں لیکن گھوسٹ ملازمین اور کام نہ کرنے والے ملازمین کی وجہ سے ٹائن شپ کے مکین مسائل سے دوچار ہیں بونڈری وال نہیں ہے،گیس نہیں ہے،بجلی کے مسائل الگ ہیں سیوریج کا نظام بھی خراب ہے پی ڈی غیر ٹیکنیکل ہے جب مکینوں کا وفد ان سے مسائل کے حل کیلئے ملنے جاتا ہے تو وہ مسائل حل کرنے کے بجائے کہتا ہے کہ میں آپ لوگوں کو جواب دہ نہیں ہوں انہوں نے کہا کہ ٹاؤن شپ میں پانی کا بھی مسئلہ ہے اور مذید ہم صبر نہیں کرسکتے ہیں ٹاؤن شپ میں جو سہولیات ہونی چاہیئے وہ میسر نہیں اور ٹاؤن شپ بھیڑ بکریوں اور جانوروں کے بھاڑے میں تبدیل ہوگیا ہے لہذا انہوں نے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا،کمشنر بنوں،ڈپٹی کمشنر بنوں اور صوبائی وزیر بلدیات سے پرزور مطالبہ کیا کہ وہ فوری طور پر موجوہ پی ڈی کو کو تبدیل کریں اور آئندہ کسی بھی ڈیپوٹیشن والے آفیسر کو نہ بھیجیں کیونکہ ٹاؤن شپ کے مکین کے صبر کا پیمانہ لبریز ہوگیا ہے اور دھرنا پی ڈی کے تبادلے تک جاری رہیگا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر