سپریم کورٹ نے پولی کلینک انفراسٹرکچر از خود نوٹس کیس نمٹا دیا

سپریم کورٹ نے پولی کلینک انفراسٹرکچر از خود نوٹس کیس نمٹا دیا

  



اسلام آباد (این این آئی)سپریم کورٹ نے پولی کلینک انفاسٹرکچر از خود نوٹس کیس نمٹا دیا اور کہا ہے کہ وفاقی حکومت اور پولی کلنک انتظامیہ نے اسلام آباد ہائی کورٹ کا فیصلہ چیلنج نہیں کیا۔ جمعرات کو چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی۔دوران سماعت چیف جسٹس نے کہاکہ ایسا لگ رہا ہے کہ پولی کلینک انتظامیہ کو ہائی کورٹ کے فیصلے پر کوئی اعتراض نہیں۔ ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہاکہ پولی کلینک انتظامیہ ہائی کورٹ کے فیصلے سے خوش ہے۔چیف جسٹس نے کہاکہ کیا پولی کلینک انتظامیہ نہیں چاہتی کہ ہستال کی توسیع ہو۔ ڈپٹی ایگزیکٹو ڈائریکٹر پولی کلینک نے کہاکہ ہم تو چاہتے تھے کہ پارک والی جگہ پر سی ڈی اے اجازت دے تو تعمیرات کریں۔ ڈپٹی ایگزیکٹو ڈائریکٹر پولی کلینک نے کہاکہ یہ معاملہ کئی سالوں سے لٹک رہا ہے اس لیے ہم نے تجویز دی تھی کہ کسی دوسری جگہ عمارت تعمیر کریں۔ جسٹس اعجاز الاحسن نے کہاکہ آپ کیا جاہتے ہیں کہ پولی کلینک ہسپتال کی آدھی عمارت یہاں اور آدھی کسی دوسرے سیکٹر میں ہو،سپریم کورٹ نے اسی لیے از خود نوٹس لیا تھا کہ ہسپتال کی تعمیر کا مسئلہ حل ہو۔

سپریم کورٹ

مزید : صفحہ آخر