وزیراعلٰی خیبر پختونخوا سے بھی ناراض پی ٹی آئی گروپ سامنے آگیا

وزیراعلٰی خیبر پختونخوا سے بھی ناراض پی ٹی آئی گروپ سامنے آگیا

  



اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)تحریک انصاف خیبرپختونخوا حکومت میں بھی وزیراعلیٰ محمد خان کیخلاف ناراض گروپ سامنے آگیا،28ارکان صو با ئی اسمبلی پر مشتمل ناراض ارکان کی جانب سے وزیراعلیٰ ہٹانے کا مطالبہ، ناراض گروپ میں 7اہم صوبائی وزراء بھی شامل، ناراض گروپ کے اراکین وزیراعظم عمران خان کے رویے سے بھی نالاں، بے جا مداخلت سے گریزکرنے کی درخواست، وفاقی حکومت اور اسلام آباد میں بیٹھے لوگ صوبے کے معاملات چلانا چاہتے ہیں اور چلا رہے ہیں، ناراض گروپ کا موقف۔تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف کی پنجاب حکومت کے بعد خیبرپختونخوا حکومت میں ناراض ارکان کا گروپ سامنے آ گیا۔ ذرائع کے مطابق ناراض ارکان کے گروپ میں 28 پاکستان تحریک انصاف اراکین شامل ہیں اور ان28ارکان میں 7اہم صوبائی وزراء بھی ناراض اراکین کا حصہ ہیں، ان ناراض ارکان کا موقف ہے خیبرپختونخوا حکومت کو وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کے بجائے اسلام آباد سے چلایاجا رہا ہے اور کئی بار وزیراعلیٰ کو نوٹس دلانے کے باوجو د ان کا اس معاملے میں بے بس نظر آنا ہے، ناراض گروپ کا کہنا ہے صوبے کیلئے ایسا وزیر اعلیٰ چاہتے ہیں جو با اختیار اور آزاد ہو اور صوبے کے انتظامی معاملات کو بھی کنٹرول کر سکے، ناراض گروپ کے مطابق انہیں صوبے قومی اسمبلی کے اراکین کی بھی حمایت حاصل ہے اور وہ د یگر پارٹیوں کے صوبائی اراکین سے بھی رابطے میں ہیں، امید ہے اپوزیشن کے حامی افراد بھی سپورٹ کرنے کو تیار ہیں، ناراض گروپ کی جانب سے صوبے میں ترقیاتی کاموں میں سست روی اور اسلام آباد سے بے جا مداخلت اور فنڈز کی تقسیم نہ ہونے پر بھی اظہار ناراضگی کا ا ظہا ر کیا گیا ہے اور ان کے مطابق وہ جلد وزیراعلیٰ محمود خان کو ہٹا کر نیا وزیراعلیٰ دیکھنا چاہتے ہیں، اس سے قبل وزیراعلیٰ محمود خان کی زیر صدا ر ت اجلاس میں تحریک انصاف کے اراکین نے کابینہ میں کرپشن زدہ ارکان کو شامل کرنے پر اظہار ناراضگی کیا تھا اور وزیر کو کہا تھا لگتا ہے وہ صوبے کے معاملات کو کنٹرول کرنے پر بے بس نظر آتے ہیں جبکہ وزیراعلیٰ اگر آزادانہ صوبے کے معالات نہیں چلا سکتے ہیں تو وہ اپنے عہد ے کو چھوڑ دیں اور صوبائی اسمبلی اپنا نیا وزیراعلیٰ لا سکے، اجلاس میں ارکان نے فنڈز کی تقسیم کے حوالے سے یہ شکایات کی تھیں،اجلاس میں صوبائی اسمبلی کے ارکان وزیراعظم عمران خان کے رویے سے بھی نالاں تھے اور ان کی جانب سے ہر معاملے میں مداخلت کو ناپسند کیا اور مطالبہ کیا کہ اسلام آباد میں بیٹھے لوگ صوبائی معاملات پر مداخلت سے گریز کریں۔

ناراض گروپ

مزید : صفحہ اول