واٹر بورڈ سے 18گریڈ کے بی ٹیک انجینئرز کو ہٹانے کے احکامات

واٹر بورڈ سے 18گریڈ کے بی ٹیک انجینئرز کو ہٹانے کے احکامات

  



کراچی (نمائندہ خصوصی) کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ میں تعینات 18 گریڈ کے تمام بی ٹیک انجینئرز کو ہٹانے کے احکامات جاری، 200 سے زائد افسران کو ہٹانے سے سیوریج اور پانی کی فراہمی کا سارا نظام متاثر ہونے کا خدشہ۔ تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ کے احکامات بجا لاتے ہوئے محکمہ بلدیات کے مختلف شعبوں میں تعینات تمام بی ٹیک انجینئرز کو ہٹا کر پروفیشنل انجینئرز کو لگانے کا عمل شروع کردیا گیا۔ کے ایم سی سے بھی 500 کے قریب ایسے افسران کو ہٹایا جارہا ہے جن کی ڈگری بی ٹیک انجینئرز کی ہے۔ کراچی واٹر بورڈ میں 200 سے زائد ایسے افسران موجود ہیں جو بی ٹیک انجینئرز کی بنیاد پر اسسٹنٹ ایگزیکٹو انجینئرز بھرتی کیے گئے جو بعد ازاں ترقی پا کر سپرنٹنڈنٹ انجینئر اور چیف انجینئرز جیسے اہم عہدوں پر آگئے۔ بیشتر افسران گریڈ 17 کی بجائے گریڈ 18 میں تعینات کیے گئے۔ جبکہ ان کا اصل گریڈ 16 بنتا ہے۔ ایسے تمام افسران کیلئے حکم نامہ دیدیا گیا کہ انہیں واپس گریڈ 16 میں تعینات کیا جائے۔ اس طرح بیشتر اہم مقامات پر خدمات دینے والے افسران کو ہٹانے سے واٹر بورڈ کا سارا نظام تلپٹ ہوکر رہ جائے گا۔ فراہمی و نکاسی آب کا نظام متاثر ہوگا جس سے عوام کو مشکلات درپیش آئیں گی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر