باجوڑ، کنٹر یکٹر ایسوسی ایشن کا یکم فروری سے ترقیاتی کام بندکرنے کا اعلان

    باجوڑ، کنٹر یکٹر ایسوسی ایشن کا یکم فروری سے ترقیاتی کام بندکرنے کا اعلان

  



باجوڑ(نمائندہ پاکستان) باجوڑ کنٹریکٹرزایسوسی ایشن کا ترقیاتی کاموں کے بل ریلیز نہ ہونے پر یکم فروری سے تمام ترقیاتی کام بند کرنے کا اعلان، وزیر اعلیٰ ہاؤس کے سامنے دھرنا اور بھوک ہڑتالی کیمپ لگانے کا بھی اعلان۔ جمعرات کے روز باجوڑ پریس کلب میں ایک پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آل باجوڑ کنٹریکٹرز ایسوسی ایشن کے صدر ملک عمر واحد، حاجی گل کریم خان، انجینئر خائستہ محمد اور دیگر ٹھیکہ داروں نے کہاکہ جب سے قبائلی اضلاع کا صوبہ خیبر پختونخواہ میں انضمام ہواہے تو قبائلی اضلاع کے ٹھیکہ داروں کے ترقیاتی کاموں میں خرچ شدہ کروڑوں روپے کے بل پھنس گئے ہیں اور حکومت ٹھیکہ داروں کے بل ریلیز کرنے کو تیار نہیں ہیں۔ بل ریلیز نہ ہونے کیوجہ سے ٹھیکہ داروں کو سخت مالی مشکلات کا سامنا ہے اور ہم مجبوراََ یکم فروری سے جاری تمام ترقیاتی کام بند کررہے ہیں کیونکہ ہمارے ساتھ مزید پیسے نہیں ہیں۔اگر حکومت نے یکم فروری تک ہمارے بلوں کے پیسے ریلیز نہیں کئے تو آئندہ کسی بھی ٹینڈر میں حصہ نہیں لینگے۔ ٹھیکہ داروں کا کہنا تھا کہ وزیر اعلیٰ خیبرپختونخواہ کے آبائی ضلع سوات اور دیگر بندوبستی اضلاع میں ترقیاتی کاموں کے فنڈز آزاد ہیں لیکن ضم شدہ اضلاع کے ترقیاتی فنڈز کے پیسے نہ دینا سمجھ سے بالاترہے۔ انھوں نے کہا کہ ہم سے سرکاری محکموں میں بلوں کے ریلیز کے وقت کمیشن بھی لیاجاتاہے لیکن اس کے باوجود بھی بل ریلیز نہیں کی جارہی۔ انھوں نے کہا کہ قبائلی اضلاع اور باجوڑ کے ٹھیکہ داروں نے انتہائی خراب حالات میں ترقیاتی کام کروائے اور حکومت کے مشکل منصوبوں کو پایہ تکمیل تک پہنچایا لیکن اس کے برعکس یہ صلہ دیا جارہاہے کہ ہمارے کروڑوں روپے کے بل ریلیز نہیں کی جارہی ہیں۔ کنٹریکٹرز کا کہنا تھا کہ تبدیلی سرکارنے وعدہ کیا تھا کہ کرپشن کا خاتمہ کیا جائیگا لیکن سرکاری دفاتر میں پہلے سے ذیادہ کرپشن ہورہی ہے اور سرکاری آفیسران ٹھیکہ داروں سے ماضی کے برعکس ذیادہ کمیشن لیتے ہیں۔ٹھیکہ داروں نے مطالبہ کیا کہ پبلک ہیلتھ اور ایری گیشن محکموں کے ٹینڈر پشاور میں ہوتے ہیں لہذا یہ ضلعی سطح پر کی جائے،اگر یہ مطالبہ نہ مانا گیا تو ہم ٹینڈر میں حصہ نہیں لینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر