”میرے پاس تم ہو“ کا حصہ بن کر مایوسی ہوئی،رحمت اجمل

”میرے پاس تم ہو“ کا حصہ بن کر مایوسی ہوئی،رحمت اجمل
 ”میرے پاس تم ہو“ کا حصہ بن کر مایوسی ہوئی،رحمت اجمل

  



لاہور(فلم رپورٹر)مقبول ترین ڈرامہ سیریل ”میرے پاس تم ہو“ میں کام کرنے والی اداکارہ رحمت اجمل کا کہنا ہے کہ انہیں اس پراجیکٹ کا حصہ بن کر بہت مایوسی ہوئی۔رحمت اجمل اس ڈرامے میں عائشہ’نامی لڑکی کا کردار ادا کررہی ہیں جو ڈرامے کے مرکزی کردار‘دانش’کی دوست بنی ہیں۔جہاں کاسٹ میں موجود ہر اداکار کی اداکاری کو پسند کیا گیا تو وہیں کچھ کو تنقید کا سامنا بھی کرنا پڑا انہیں میں ایک رحمت اجمل بھی ہیں، جنہوں نے خود پر ہوئی تنقید کے بعد خلیل الرحمٰن قمر کے نظریات سے خود کو الگ کرنے کا اعلان کردیا ہے۔اپنے انسٹاگرام اکاؤنٹ پر ایک پوسٹ کے ذریعے اداکارہ نے لکھا کہ میں جانتی ہوں کہ فنکار ہونے کی حیثیت سے ہماری سماجی ذمہ داری ہے کہ ہم ایسا مواد پروڈیوس کریں جس کے ذریعے مثبت پیغام دیا جائے اور میں اپنی اس ذمہ داری کو بے حدسنجیدگی سے ادا کرنے کی کوشش کرتی ہوں۔اداکارہ کے مطابق‘مجھے کئی روز سے ایسے پیغامات موصول ہورہے جس میں نفرت انگیز جملے اور پریشانیوں کا اظہار کیا گیا، یہی وجہ ہے کہ میں نے اب اس پر کھل کر بات کرنے کا فیصلہ کیارحمت اجمل نے کہا کہ‘میں خلیل الرحمٰن قمر کے نظریات سے بالکل اتفاق نہیں کرتی، میں نے خلیل الرحمٰن قمر کا انٹرویو سنا اور ڈرامے کے اختتام سے قبل مجھے ان کے پریشان کن خیالات کا اندازہ ہوا، میں ایسے کسی پراجیکٹ کا حصہ بن کر فخر محسوس نہیں کرتی جس کے رائٹر کے نظریات ایسے ہوں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ‘البتہ میں اور میرے جیسے دیگر اداکار خلیل الرحمٰن قمر کی سوچ کے بارے میں اس وقت نہیں جانتے تھے جب ہم نے ایک ساتھ اس ڈرامے کی شوٹنگ کی، ہمیں ڈرامے کی مکمل کہانی بھی معلوم نہیں تھی، پراجیکٹ میں میرا کردار ویسے بھی مختصر ہے، یہ میرے کیریئر کا پہلا ٹی وی ڈرامہ ہے اور میں اس وقت سیکھ رہی ہوں، میں نے اس پراجیکٹ کے ساتھ یہ بھی سیکھا کے اپنے انتخابات کو لے کر محتاظ رہنے کی ضرورت ہے اداکارہ نے اپنی پوسٹ کا اختتام اس درخواست کے ساتھ کیا کہ لوگ نئے فنکاروں کو موقع دیں تاکہ وہ سیکھ سکیں۔

مزید : کلچر