”ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کے چیئرمین کو ن لیگ نے ۔۔“کرپشن میں اضافے کی رپورٹ پر حکومت میدان میں آ گئی ، حیران کن بات کہہ دی

”ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کے چیئرمین کو ن لیگ نے ۔۔“کرپشن میں اضافے کی رپورٹ پر ...
”ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کے چیئرمین کو ن لیگ نے ۔۔“کرپشن میں اضافے کی رپورٹ پر حکومت میدان میں آ گئی ، حیران کن بات کہہ دی

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )گزشتہ روز ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کی کرپشن پر رپورٹ جاری ہوئی جس میں 2018سے2019 کے دوران پاکستان میں کرپشن میں اضافے کا اشارہ دیا گیااس پر اب حکومت میدان میں آ گئی ہے ۔ فردوس عاشق اعوان نے اس رپورٹ کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل پاکستان چیپٹرکے سربراہ کون لیگ نے نوازا اورسفیرمقررکیا تھا۔

پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے فردوس عاشق اعوان کا کہناتھا کہ بیڈ گورننس اور کرپشن کی ایک طویل داستان لکھی ہوئی ہے اور تاریخ کے سنہرے حروف میں رقم ہے ، جس ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کی رپورٹ کے حوالے سے میڈیا ، اخبارات ،سول سوسائٹی اور عوام میں ایک مباحثہ چل رہاہے ، یہ بڑا ضروری ہے کہ اس ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کی اپنی ساخ کا جائزہ لیا جائے ، جس ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کی رپورٹ پر ہم اس وقت موجودہ حکومت کے حوالے سے صاف اور شفاف نہ ہونے کے فتوے دے رہے ہیں، اس ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کی اپنی ٹرانسپرنسی پر بہت بڑا سوالیہ نشان ہے۔

انہوں نے کہا کہ ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل جس ڈیٹا کی بنیاد پر پرسیپشن انڈیکس ترتیب دیتی ہے اس کو ترتیب دینے والے افرا د ،جہاں سے وہ ڈیٹا اکھٹا کر رہے ہیں ، ان تمام کاگٹھ جوڑ عوام کے سامنے لانا ضروری ہے ، ٹرانسپرنسی انٹرنیشن پاکستان چیپٹر کو جو ہیڈ کر رہے تھے ،ان موصوف نے جو سابق ادوار میں ن لیگ کی قیادت اور حکومت کو جس طرح پذیرائی بخشی اور ان کو نوازنے کیلئے اعلیٰ کارکردگی پر سفیر کے عہدے پر تعینات کیا گیا اور ہمارا قصور یہ ہے کہ ہم نے ان کے اس عہدے میں توسیع نہیں کی اور وہ اپنے وقت پر ریٹائر ہو گئے ہیں ۔

فردوس عاشق اعوان کا کہناتھا کہ دوسری بات یہ ہے کہ اس رپورٹ کو کون مانے گا جس میں کہا گیا کہ سب سے زیادہ کرپشن مشرف دور میں ہوئی ، پھر عمران خان کے دور کو زیر بحث لایا گیا اور اس کے بعد پیپلز پارٹی کا نمبر اور ن لیگ کے دور میں سب سے کم کرپشن ہوئی، یہ رپورٹ پڑھ کر صرف آپ ہنس سکتے ہیں ۔ان کا کہناتھا کہ جن کو پاکستان کی عدالتیں کرپشن کنگز قرار دے رہی تھیں ، کرپشن کنگز کے مختلف کارنامے اور سیاہ کاریاں عدالتوں میں زیر سماعت ہیں ، ان جماعتوں کو اس رپورٹ میں کلین چٹ دی گئی ہے ، اس کا مطلب یہ ہواہے کہ یہ فیئر اور ٹرانسپرنٹ رپورٹ نہیں ہے ، یہ رپورٹ متعصبانہ ہے ۔

ان کا کہناتھا کہ وزیراعظم اس بات پر یقین رکھتے ہیں جو کہ مینڈیٹ پاکستان کی عوام نے انہیں دیا ہے اس پر من و عن عمل ہوگا اور پاکستان کو صاف شفاف بنانے کیلئے وہ ہر فورم پر اپنے عمل اور اپنی پالیسی سے جدوجہد کرتے رہیں گے ، یہ کرپشن زدہ نظام اور اس سے فائدہ حاصل کرنے والوں کا ایک منظم نیٹ ورک ہے جو ایک دوسرے کو سپورٹ کرتاہے اور ہر جگہ ان کے اعلیٰ کار ہیں جو ان کی سیاہ کاریوں کو تحفظ دیتے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے کرپشن اور کرپٹ عناصر سے نہ کبھی سمجھوتہ کیا اور نہ آئندہ کریں گے ، کرپشن کنگز ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کی رپورٹ کو اپنے گناہ چھپانے کیلئے آڑکے طور پرا ستعمال کر رہے ہیں جس میں انہیں مایوسی ہو گی ، موڈیز موجودہ حکومت کے معاشی عشاریوں میں بہتری کی نہ صرف تائید کر رہے ہیں بلکہ اس کو سراہ بھی رہے ہیں ۔

مزید : قومی