عراق میں امریکی افواج کی موجودگی کیخلاف ملین مارچ

عراق میں امریکی افواج کی موجودگی کیخلاف ملین مارچ
عراق میں امریکی افواج کی موجودگی کیخلاف ملین مارچ

  



بغداد(ڈیلی پاکستان آن لائن)عراقی دارالحکومت بغدادمیںامریکی فوج کیخلاف ’ملین مارچ‘ کاانعقاد کیاگیاجس میں ہزاروں افراد شریک ہوئے اور شہر انسانی سمندرمحسوس ہونے لگا۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق عراق میں امریکی افواج کی موجودگی کے خلاف ہونے والے اس احتجاج کی کال عراق کے بااثر رہنما مقتدیٰ الصدر نے دی تھی۔عراقی میڈیا کے مطابق اس مارچ کا آغازجمعہ نمازجمعہ کے بعد ہونا تھا تاہم ہزاروں عراقی شہری نماز سے قبل ہی گھروں سے نکل آئے اور گلیوں اور چوراہوں پر جمع ہوگئے جو وقت کے ساتھ بڑھتے ہی چلے جارہے ہیں۔دوران احتجاج مظاہرین ’جمعہ ملین مارچ‘ اور’ عراقی خودمختاری مانگتے ہیں‘ کے نعرے بھی لگاتے رہے۔

عراق اور مڈل ایسٹ اپ ڈیٹس کے مطابق مظاہرین کی تعداد اس قدر زیادہ ہے کہ آٹھ کلومیٹر تک تمام سڑکیں انسانوں سے بھر چکی ہیں۔

واضح رہے کہ پانچ جنوری کو عراقی پارلیمان نے امریکی افواج کے عراق سے نکل جانے کے حق میں فیصلہ دیا تھا۔ پارلیمان کا یہ فیصلہ ایرانی کمانڈر قاسم سلیمانی اور عراقی ملیشیا کے ایک رکن ابو مہدی المہندس کی بغداد میں ایک امریکی ڈرون حملے میں ہلاکت کے بعد سامنے آیا تھا۔ تاہم امریکا نے اس فیصلے کو ماننے سے انکار کرتے ہوئے پابندیاں لگانے کی دھمکی دے دی تھی جس کے بعد سے عراقی حکومت کی کوشش ہے کہ یہ معاملہ کسی کشیدگی کے بجائے افہام و تفہیم سے حل ہوجائے۔

مزید : بین الاقوامی /عرب دنیا