بھارت کی پہلی خاتون روبوٹ منظر عام پر آگئی

بھارت کی پہلی خاتون روبوٹ منظر عام پر آگئی
بھارت کی پہلی خاتون روبوٹ منظر عام پر آگئی

  



نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت کی پہلی خاتون روبوٹ منظرعام پر آ گئی۔ میل آن لائن کے مطابق یہ ’ہاف ہیومینائیڈ روبوٹ‘ بھارت کے خلائی تحقیقاتی ادارے ’انڈین سپیس ریسرچ آرگنائزیشن‘ (اسرو)نے تیار کی ہے۔ یہ انسان نما روبوٹ ٹانگوں کے بغیر بنائی گئی ہے جسے اسرو کے سائنسدان اپنے تحقیقاتی مشن پر خلاءمیں بھیجیں گے۔ اسرو کے سائنسدان رواں سال دسمبر میں خلاءمیں ایک بغیر انسان کے مشن روانہ کر رہے ہیں جس میں یہ خاتون روبوٹ جائے گی۔

اس خاتون روبوٹ کا نام ’ویوم مترا‘ (Vyommitra)رکھا گیا ہے جسے آج میڈیا کے سامنے پیش کیا گیا۔ ویوم مترا دو زبانیں بول سکتی ہے، انسانوں کے چہرے پہچان سکتی ہے اور لوگوں کے سوالوں کے جوابات دے سکتی ہے۔ جب اسے میڈیا کے سامنے پیش کیا گیا تو اس نے خود بول کر رپورٹرز کا استقبال کیا۔ اس نے بھارتی لہجے میں انگریزی بولتے ہوئے کہا کہ ”ہائے، میں ہاف ہیومینائیڈ (Half Humanoid)کی پہلی پروٹوٹائپ (Prototype)ویوم مترا ہوں۔میں آپ کی دوست بن سکتی ہوں اور خلا نوردوں کے ساتھ گفتگو کر سکتی ہوں۔ میں ان کے چہرے بھی پہچان سکتی ہوں اور ان کے سوالوں کے جوابات بھی دے سکتی ہوں۔“ اسرو کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ رواں سال دسمبر میں اس مشن کی کامیابی کی بعد دسمبر 2022ءمیں خلائی مشن پر انسانوں کو خلاءمیں بھیجا جائے گا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی /سائنس اور ٹیکنالوجی