وفاقی وزیر کا وریہ مناسب نہیں:مراد شاہ،وزیر اعلیٰ خود تکبر کی علامت:علی زیدی،وزیر اعظم کو خطوط

  وفاقی وزیر کا وریہ مناسب نہیں:مراد شاہ،وزیر اعلیٰ خود تکبر کی علامت:علی ...

  

 کراچی(آئی این پی)وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ اور وفاقی وزیر علی زیدی آمنے سامنے آگئے جس پر دونوں نے وزیراعظم کو ایک دوسرے کی شکایت کردی۔نجی ٹی وی کے مطابق وفاقی وزیر علی زیدی نے رابطہ کمیٹی میٹنگ میں مراد علی شاہ سے سخت لہجے میں بات کی جس پر مراد علی شاہ نے وزیر اعظم عمران خان کو خط لکھا کہ علی زیدی نے میٹنگ میں پارلیمانی زبان اور رویے کا لحاظ نہیں کیا، علی زیدی نے میٹنگ میں سب کے سامنے وزیراعلی سے نامناسب رویہ اختیارکیا اور وہ اس سے قبل بھی نامناسب رویہ اختیارکرچکے ہیں۔ رابطہ کمیٹی میٹنگ میں یہ رویہ روایات کے خلاف ہے، میٹنگ میں علی زیدی انتہائی تکبر اورغرور سے وزیراعلی کو مخاطب کرتے رہے۔مراد علی شاہ نے کہا کہ خط کے ذریعے اپنا احتجاج ریکارڈ کرارہا ہوں لہٰذا آئندہ اجلاس میں علی زیدی سنجیدگی کا مظاہرہ کریں۔دوسری جانب وفاقی وزیر علی زیدی نے بھی اس معاملے پر وزیراعظم کو جوابی خط لکھا ہے کہ مرادعلی شاہ نے شائستگی کی حدود پھلانگ کر وزیراعظم کو خط بھجوایاہے۔ ان کا خط ان کے دماغ میں سمائے بلاجواز تکبر اور بے وجہ غرور کا مظہر ہے۔کراچی میں ترقیاتی سرگرمیوں کیلئے نگراں کمیٹی بنے 6ماہ سے زائد ہوگئے، کمیٹی میں صوبائی حکومت،اہم وفاقی وصوبائی اداروں کے ذمہ دار،3وفاقی وزرا بھی ہیں، سندھ سالڈویسٹ مینجمنٹ بورڈ اور سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کی منتقلی کا پوچھنے پرموصوف برہم ہوئے۔ وزیراعلی 6ماہ سے ان اداروں کی نچلی سطح تک منتقلی کی راہ میں رکاوٹ ہیں۔ کراچی کاکچرہ کیسے اٹھانا ہے اور نالے کیسے صاف کرنے ہیں اس پرکمیٹی کوکئی اجلاس کرنا پڑے۔ بنیادی شہری سہولیات پر کئی اجلاس مرادعلی شاہ کی نااہلی اور شرمناک نکمے پن کی علامت ہے لہٰذا مراد علی شاہ کو وفاقی حکومت اور قوم سے کیے وعدوں کی پاسداری کا پابند بنایا جائے۔ کمیٹی رکن کے طور پر منصوبوں پر پیشرفت اور تکمیل میں تاخیر پر سوال پوچھنا میرا بنیادی حق ہے، ایک مرتبہ پھر وزیراعلی سندھ کے رویے اور طرز عمل کی شدید مذمت کرتا ہوں۔

وزیراعظم خطوط

مزید :

صفحہ اول -