2 بچیاں قتل‘ تفتیش کے بعد والد گرفتار‘ واردات کا اعتراف 

  2 بچیاں قتل‘ تفتیش کے بعد والد گرفتار‘ واردات کا اعتراف 

  

مظفرگڑھ (نیوز رپورٹر‘ نامہ نگار‘ سٹی رپورٹر) 7 جنوری کو تھانہ کرمداد قریشی کے علاقہ گل قائم مستوئی میں 2 معصوم بچیوں کو زندہ جلا کر بے رحمانہ قتل کیا گیا تھا،  والد ہی خود سفاک قاتل نکلا، ظالمانہ طریقے سے قتل کرنے کے بعد خود ہی مدعی بن کر سسرالیوں کیخلاف مقدمہ(بقیہ نمبر41صفحہ 6پر)

 درج کرادیا تھا، ملزم نے اپنے جرم کا اعتراف کرلیا، پولیس نے ملزم والد کو گرفتار کرکے دہشت گردی عدالت سے پانچ روز کا جسمانی ریمانڈ بھی حاصل کرلیا۔ تفصیل کے مطابق تھانہ کرمدادقریشی میں کیس کے حوالے سے  ایس پی انوسٹی گیشن جاوید احمد خان نے ڈی ایس پی صدر فاروق احمد خان و دیگر افسران کے ہمراہ پریس کانفرنس کی۔ ایس پی انوسٹی گیشن کا کہنا تھا کہ 7 جنوری کو کرمدادقریشی میں گھر میں سوئی ہوئی ڈیڑھ سالہ عروہ اور 3 سالہ اسوہ کو پٹرول چھڑک کر آگ لگادی گئی تھی، بچیوں کے والد حافظ عبدالحمید نے خود مدعی بن کر اپنی تیسری بیوی کے اہلخانہ سسر سمیت 5 افراد کیخلاف قتل اور دہشتگردی کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کرادیا،ایس پی انوسٹی گیشن جاوید احمد خان کیمطابق جدید طریقے سے تفتیش کے بعد بچیوں کے والد عبدالحمید کو حراست میں لیکر تفتیش کی گئی،ان کا کہنا تھا کہ بچیوں کے گرفتار والد نے اعتراف کیا ہے کہ اس نے بچیوں کی رضائی پر پٹرول چھڑک کر کوئلوں سے بھری انگیٹھی بچیوں پر انڈیل دی تھی، ملزم اپنی تیسری بیوی کے اہلخانہ یعنی اپنے سسرالیوں کو پھنسانا چاہتا تھا، 7 جنوری کو قتل کے بعد باپ نے اپنے سسرالیوں کیخلاف تھانہ کرمدادقریشی میں قتل کا مقدمہ درج کروادیا تھا جبکہ ملزم کا اپنے اعترافی بیان میں کہنا تھا کہ سسرالیوں کو پھنسانے کیلئے اس نے خود ہی اپنی سوتی ہوئی دو معصوم بچیوں پر پٹرول چھڑک کر آگ لگادی تھی، پولیس نے سفاک والد کو گرفتار کر کے دہشت گردی عدالت سے 5 روزہ جسمانی ریمانڈ بھی حاصل کرلیا ہے۔

اعتراف

مزید :

ملتان صفحہ آخر -