سینڈیکیٹ اجلاس،زکریا یونیورسٹی 840ڈیلی ویجز ملازمین مستقل کرنیکا فیصلہ

سینڈیکیٹ اجلاس،زکریا یونیورسٹی 840ڈیلی ویجز ملازمین مستقل کرنیکا فیصلہ

  

 ملتان(سپیشل رپورٹر)زکریا یویورسٹی کی سینڈیکیٹ کا اجلاس، طلبا کی ایک سال کی ہاسٹل  فیس معاف، سوسے زائد اساتذہ کی ترقی، 840ڈیلی ویجز ملازمین مستقل کردئے گئے،  تفصیل کے مطابق زکریا یونیورسٹی کی سینڈیکیٹ کا اجلاس گزشتہ روز وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر منصوراکبرکنڈی  کی صدارت میں ہوا جس میں اہم فیصلے کئے گئے، اجلاس میں گزشتہ تین سلیکشن بورڈ کی سفارشات  کی(بقیہ نمبر40صفحہ 7پر)

 منظوری دے دی گئی جس کے بعد سو سے زائد اساتذہ کو ترقی کی حتمی منظوری دے دی گئی، جبکہ پی ڈی ونگ کے تمام انجینئرز اور سب انجینئرز کی ترقی کی سفارشات کو بھی قبول کرلیاگیا، برسوں سے تعینات 840ڈیلی ویجز ملازمین کو فوری مستقل کرنے کی منظوری دی گئی، اور ہدایت کی گئی جو امیدوار مطلوبہ اہلیت پر پورا اترتے ہیں ان کوفوری مستقل کیا جائے جبکہ دیگر کو کم سکیل میں ایڈجسٹ کیا جائے، اجلاس کے شرکا نے کورونا  کی وجہ سے ہاسٹلز کی بند ش کے جواز کو قبول کرتے ہوئے تمام طلبا کی ایک سال کی ہاسٹل فیس معاف کرنے کی منظوری دے دی، طلبا سے مارچ2020سے فروری2021 کی ہاسٹل فیس نہیں لی جائے گی، اجلاس میں یونیورسٹی کے سابق پی آر او امرزا اعجاز بشیر کو کنٹریکٹ پر دوربارہ بحال کردیا تاہم ان کو سابق ادوار کے واجبات نہیں ملیں گے، ان کے ساتھ  شعبہ سیاسیات کی لیکچرر صوبیہ ریاض کو بھی کو بحال کردیاگیا، ڈاکٹر فرحان اقبال کی اہلیت کے لئے دو رکنی کمیٹی بنادی گئی جس میں ڈائریکٹر اورک اور ایچ ای سی کے نمائندہ شامل ہوگا، اجلاس میں نئی گاڑیاں خریدنے کی منظوری بھی دے دی گئی  سپورٹس سائنسز کی سابق لیکچر مہرین صبا کو بھی بحال کردیا گیا، اجلاس میں وہ تمام طلبا نے اہلیت  کے کیس  پیش کئے گئے ہاوس نے تمام کو امتحانات کیلئے اہل قرارد ے دیا گیا۔علاوہ ازیں بہاء الدین زکریایونیورسٹی ملتان کی اعلی اختیاراتی کمیٹی سینڈیکیٹ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر منصور اکبر کنڈی نے کہا  ہے کہ میں اللہ تعالی کا ممنون ہوں کہ اس نے مجھے موقع دیا ایک عرصہ سے یونیورسٹی میں کچھ پیچیدہ معاملات کے التواء سے ایسی صورت حال پیدا ہوگئی تھی کہ محسوس ہوتا تھا کہ ان گتھیوں کو سلجھایا نہیں جاسکتا میں سلیکشن بورڈ اور سنڈیکیٹ کے ارکان کے ساتھ یونیورسٹی اساتذہ اور انتظامی افسروں کا بھی ممنون ہوں کہ اس اجلاس میں کئی برسوں کے معاملات کو سمیٹا گیا ہے. انشاء اللہ باقی ماندہ مسائل بھی حل ہوں گے. اور ہم اس قابل ہوں گے کہ جوہر قابل کی تربیت ہو سکے اور یہ یونیورسٹی ملک کی جامعات میں نمایاں ترین کردار ادا کرسکے. یونیورسٹی میں ڈیلی ویجز، ایڈہاک اور کنٹریکٹ پر کام کرنے والے ملازمین کے دیرینہ مسئلہ کو حل کردیاگیا..سینڈیکیٹ نے ان اساتذہ کے خلاف پیڈا ایکٹ کی اجازت دے دی جو بلا استحقاق رخصت پر رہے یا یونیورسٹی کے کسی مراسلہ کا جواب نہ دے سکے. 16/3 کے تحت وائس چانسلر کے ہنگامی اختیارات کے حوالے سے رہنما اصول بنا دیے گئے ہیں.مس صوبیہ ریاض اور پریس اینڈ پبلی کیشنز آفیسر مرزا اعجاز بشیر کو کنٹریکٹ پر بحال کردیاگیا ہے.متعدد امور نبٹانے کے لیے اجلاس رات آٹھ بجے تک جاری رہا.اجلاس میں جسٹس سردار محمد سرفراز ڈوگر، پرووائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر علیم احمد خان، ایم پی اے محمد ندیم قریشی، رجسٹرار صہیب راشد خان،پروفیسرڈاکٹر عبدالقادر بزدار، ڈاکٹر عطیہ اعوان، ڈاکٹر سعیدہ سلطانہ، پروفیسر ڈاکٹر اکبر انجم، ڈاکٹر محمد ریاض، ڈاکٹر جویریہ عباس، انجینئر محمد یوسف رضا، محمد رضا چوہان،فنانس ڈیپاٹمنٹ سے مسٹر شہسواراور امتل قدوس نے شرکت کی۔

سفارشات منظور

مزید :

ملتان صفحہ آخر -