ملزم طاہر مبین کا جوڈیشل ریمانڈ کالعدم قرار دینے کی پراسیکیوشن کی درخواست مسترد 

ملزم طاہر مبین کا جوڈیشل ریمانڈ کالعدم قرار دینے کی پراسیکیوشن کی درخواست ...

  

 لاہور(نامہ نگار) ایڈیشن سیشن جج چودھری انعام الہیٰ نے پی ٹی آئی ے رہنماشہباز گل کے خلاف دائرہتک عزت کا دعویٰ دائر کرنے والے ملزم کا جسمانی ریمانڈ نہ دینے کی درخواست کی سماعت کے دوران ملزم طاہر مبین کا جوڈیشل ریمانڈ کالعدم قرار دینے کی پراسیکیوشن کی درخواست مسترد کر دی فاضل جج نے قرار دیا کہ جوڈیشل مجسٹریٹ نے ملزم کو قانون کے مطابق جوڈیشل ریمانڈ پر بھیجاہے  پراسیکیوشن کی استدعا مسترد کی جاتی ہے کیس کی سماعت شروع ہوئی تو سرکار ی وکیل کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا کہ اسلام پورہ پولیس نے ڈاکٹر شہباز گل کی مدعیت میں ترک کمپنی کے مینجر طاہر مبین کیخلاف مقدمہ درج کیا جوڈیشل مجسٹریٹ نے تفتیشی افسر کی ملزم کے جسمانی ریمانڈ کی درخواست بلاجواز مسترد کی ملزم سے البیراک کمپنی کی جعل سازی سے تیار کی گئی دستاویزات برآمد کروانا باقی ہیں ملزم طاہر مبین کی نشاہدہی پر شریک ملزموں کی گرفتاری بھی باقی ہے جوڈیشل مجسٹریٹ نے جسمانی ریمانڈ کی درخواست مسترد کرتے ہوئے وجوہات بیان نہیں کی ملزم طاہر مبین کو جوڈیشل ریمانڈ پر بھیجنے کا حکم غیر قانونی قرار دیکر کالعدم کیا جائے ملزم کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ حکومتی ترجمان شہباز گل نے ملزم کو جھوٹے کیس میں ملوث کیا ہے ملزم البیراک کمپنی کا مینجر آپریشنز ہے اور کمپنی کا با اختیار نمائندہ ہے عدالت نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد مذکورہ بالاحکم جاری کردیا۔

مزید :

علاقائی -